آج سے بہار میں پان مسالہ اور گٹکھا بند

download (1)

نئی دہلی، ۲۱ مئی (حنیف علیمی): بہار میں نتیش حکومت عوامی صحت کو لیکر پابندیوں کے سلسلے میں ایک بار پھر سرخیوں میں آنے والی ہے۔ اس بار نتیش حکومت بہار میں پان مسالہ اور گٹکھا کو اپنے صوبے سے ختم کرنے کا فیصلہ کر چکی ہے۔ جی ہاں بہار میں پان اور گٹکھا بند ہونے جا رہا ہے، جہاں زیادہ تر لوگ ان چیزوں کا استعمال کرتے ہیں۔ حکومت نے عوامی صحت کو مد نظر رکھتے ہوئے اس پر پابندی کا حکم نافذ کردیا ہے اور ۲۱ مئی یعنی آج ہی سے بہار میں پان مسالہ اور گٹکھا بند ہونے جارہا ہے۔

حکومت کی طرف سے جاری حکم نامہ میں کہا گیا ہے کہ گٹکھا اور پان مسالہ بنانا، بیچنا، ایک جگہ سے دوسری جگہ لے جانا، دکھانا اور جمع کرنا پوری طرح غیر قانونی ہوگا۔ محکمہ غذا کے افسران کو گٹکھا اور پان مسالے پر روک لگانے کے لئے جانچ اور چھاپے مارنے کا حکم دیا گیا ہے۔ پان مسالہ اور گٹکھا کے کھانے یا کاروبار کرنے میں ملوث پائے جانے والے افراد کے خلاف تحفظ غذا ۲۰۰۶ کے قانون کے تحت کاروائی کی جائے گی۔ بہار حکومت نے گذشتہ ایک اپریل ہی کو شراب پر پابندی عائد کی تھی جس کی ملک بھر میں حوصلہ افزائی کی گئی اور بہار کے عوام خاص کر عورتوں نے جشن منایا تھا۔ واضح ہو کہ نتیش کمار نے اپنے الیکشن کے وعدوں میں یہ کہا تھا کہ اگر ہم جیت گئے تو بہار کو شراب سے آزاد کرائیں گے۔ بہار میں شراب پر پابندی کے بعد جرائم میں کمی درج کی گئی ہے اور حادثات میں بھی کافی کنٹرول ہوا ہے۔

160520212013_gutkha_ban_624x351_reuters

ویسے تو ملک کی راجدھانی دہلی میں بھی گٹکھے پر پابندی عائد ہے مگر ہم سب جانتے ہیں کہ دہلی میں یہ پابندی کس حد تک کامیاب ہوئی ہے۔ شاید ہی کوئی ایسی گلی یا نکڑ مل جائے جہاں گٹکھا تمباکو سرعام نہ فروخت کئے جاتے ہوں۔ دیکھنا یہ ہے کہ نتیش کمار اب پان مسالہ اور گٹکھے کی پابندی میں کس حد تک کامیاب ہوتے ہیں۔ بہار میں بھی دہلی جیسی پابندی ہی رہتی ہے یا پھر وہ بہار میں شراب جیسی پابندی ہی رکھیں گے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *