ادارہ شرعیہ کے امین شریعت مفتی عبدالواجد کا انتقال

پٹنہ: ۔مرکزی ادارہ شرعیہ کے امین شریعت سوئم خلیفہ حضور مفتی اعظم ہند مفتی عبدالواجد قادری کا جمعرات کو ہالینڈ میں حرکت قلب بند ہونے سے انتقال پرملال ہوگیا- حضرت ادارہ شرعیہ کے عظیم ترین ستون تھے- ان کے انتقال پر اظار تعزیت کرتے ہوئے ادارہ شرعیہ کے کارگزار صدر مولانا غلام رسول بلیاوی نے کہا: حضرت مفتی عبدالواجد کی رحلت کی خبرسنتے ہی ایسا سناٹا طاری ہوا کہ قلب جگر لرز گئے- مرکزی ادارہ شرعیہ کا تابناک مستقبل ان کی ذات سے وابستہ تھا لیکن اچانک اس سانحہ نے ہم سب کو پھر اندر سے مضمحل کر دیا- جماعت اہل سنت کو ہفتہ بھر میں دو بڑے حادثے سے گذرنا پڑا ہے- ابھی تاج الشریعہ کے وصال غم سے ہر آن کے سکون چھن گئے تھے- ابھی سنبھل بھی نہیں پائے تھے کہ امین شریعت کی رحلت نے پھرسے زخم غم کو ہرا کر دیا- ابھی پندرہ بیس روز قبل حضرت امین شریعت کی قیادت میں ادارہ شرعیہ کے ایک وفد نے حضور قاضی القضاۃ فی الھند تاج الشریعہ سے ملاقات وزیارت کاشرف حاصل کیا تھا- واپسی کے بعد 4 جولائی کوحضرت ہالینڈ کے لئے روانہ ہوئے تھے- ان کے وہاں سے واپس ہونے کے بعد مرکزی شوری طلب کرنا تھا مگر اس دوران یہ سانحہ پیش آگیا- مولانا غلام رسول بلیاوی نے کہا: ان بزرگوں کی دعاوں کے سہارے ہر مشکل سے ٹکرا جانا ہم اپنی فتح سمجھتے تھے- ایسی ایسی بلند اقبال شخصیتیں صدیوں میں جلوہ گرہوتی ہیں- اللہ تبارک و تعالی کی بارگاہ میں عاجزانہ دعا ہے کہ مولائے کائنات نعم البدل عطا فرمائے اور وارثین و پسمانگان کو صبر جمیل و جزیل عطا فرمائے- حضرت امین شریعت سوئم کے ساتھ طویل عرصے تک الحاج سید ثناءاللہ رضوی، حافظ ڈاکٹرغلام جیلانی، مولانا ثناءالمصطفی، مفتی نعمان اختر فائق الجمالی اورادارہ کے اراکین و محبین بحسن و خوبی ادارہ کے فروغ و استحکام میں قدم سے قدم ملا کر چلتے رہے۔

Share

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *