اقلیتی کمیشن کی شکایت پر پولیس افسر کے خلاف کارروائی کی ہدایت جاری

نئی دہلی: لفٹننٹ گورنر دہلی ابیل بیجل نے صدر دہلی قلیتی کمیشن ڈاکٹر ظفرالاسلام خان کو جواب خط لکھ کر مطلع کیا ہے کہ انہوں نے کمشنر دہلی پولیس کو ہدایت دے دی ہے کہ ایک پولیس افسر کی بدتمیزی کے بارے میں ضروری کارروائی کریں۔ یاد رہے کہ ڈاکٹر ظفرالاسلام نے لفٹننٹ گورنر کو مطلع کیا تھا کہ دہلی پولیس کے ایک افسر کے ہاتھوں سابق صدر حج کمیٹی تنویر احمد کے ساتھ بدتمیزی کے سلسلے میں شکایت پر دہلی پولیس کمشنر کی توجہ بار بار دلانے کے باوجود اس سلسلے میں کوئی کارروائی نہیں ہورہی ہے۔

قابل ذکر ہے کہ گذشتہ سال اکتوبر میں دہلی پولیس کے ایک افسر نے تنویر احمد کے ساتھ اس وقت بدتمیزی کی تھی جب وہ رام لیلا میدان میں ایک اجلاس کے مہمان خصوصی تھے۔ اس سلسلے میں دہلی پولیس کمشنر سے بار بار کی شکایت کے باوجود کوئی اقدام نہیں کیا گیا۔ اس کے بعد ظفر الاسلام خان نے دہلی کے لیفٹننٹ گورنر کو مکتوب بھیج کر اس جانب ان کی توجہ مبذول کرائی ہے۔

یہ بھی دلچسپ بات ہے کہ دہلی پولیس مرکزی وزارت داخلہ کے ماتحت کام کرتی ہے- مرکز میں بی جے پی کی حکومت ہے۔ راجناتھ سنگھ وزیر داخلہ ہیں۔ تنویر احمد بھی بی جے پی کے لیڈر ہیں- ان کے خلاف پولیس افسر کی بدتمیزی کی شکایت بی جے پی ہی کے ایک رہنما سریش شریواستو نے کرائی تھی۔ وزیر اعظم نریندر مودی کی حکومت کے چار سال آج پورے ہوگئے ہیں- اقلیتوں کے ساتھ پولیس کے رویے کا اندازہ اسی سے لگایا جا سکتا ہے کہ بی جے پی کے ایک سینئر رہنما کو بھی انصاف کے لیے در در بھٹکنا پڑ رہا ہے۔

Share

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *