اے ایم یو کے خلاف کوئی سازش منظور نہیں: رئیس احمد

rais ahmad alig

ممبئی، ۲۲ مئی (پریس ریلیز): علی گڑھ مسلم یونیورسٹی اولڈ بوائز، مبئی کے جنرل سکریٹری اور رساز گروپ کے مالک رئیس احمد نے علی گڑھ مسلم یونیورسٹی کے خلاف چلنے والی سازشوں پر ناراضگی ظاہر کرتے ہوئے کہا کہ علی گڑھ مسلم یونیورسٹی کے خلاف ہونے والی ہر سازش کچل ڈالی جائے گی۔

رئیس احمد نے ادب سلسلہ کے مدیر محمد سلیم علیگ سے گفتگو کے دوران بتایا کہ مرکزی حکومت مسلمانوں کے خلاف سازش میں مصروف ہے اور اسی لیے مسلسل جامعات کو نقصان پہنچانے میں مصروف ہے۔ انہوں نے اس بات پر زور دیا کہ اب وہ وقت آگیا ہے جب ہر خاص وعام تک سرسید احمد خاں کے پیغام کو پہنچایا جائے۔ رئیس احمد نے کہا کہ حکومت کی منشا یہ ہے کہ مسلمانوں کی خدمات کو نظر انداز کیا جائے۔ اور اسی لیے نصاب میں تبدیلی اور مسلمانوں کو معاش اور اقتصادی سطح پر کمزور کرنے کا ہر عمل دہرایا جارہا ہے۔ لیکن حکومت یہ بھول گئی ہے کہ مسلمانوں کی اتنی بڑی آبادی کو نقصان پہنچانا آسان نہیں ہے۔ اب اس ملک کے مسلمان جاگ چکے ہیں اور اگر مسلمانوں نے بغاوت کا جھنڈا اٹھا لیا تو مرکزی حکومت کے لیے مشکلیں کھڑی ہوجائیں گی۔

رئیس احمد نے کہا کہ علی گڑھ مسلم یونیورسٹی کے اقلیتی کردار سے کھیلنا اسی سازش کی ایک کڑی ہے۔ حکومت کو سمجھنا چاہئے کہ آج دنیا بھر میں سرسید اور علی گڑھ مسلم یونیورسٹی پر جان دینے والے موجود ہیں اور یہ تعداد کروڑوں میں ہے۔ سرسید احمد خاں نے جس طرح علی گڑھ مسلم یونیورسٹی کے لیے جان کی بازی لگادی، وہ تاریخ کا ایک حصہ ہے، ایک ایسا حصہ جسے ہندوستان کے مسلمان کبھی فراموش نہیں کرسکتے۔ اس لیے اگر سرسید احمد خاں کے وقار اور مسلم یونیورسٹی پر کوئی آنچ آتی ہے تو ہندوستان کے تمام مسلمان حکومت کے خلاف صف آرا ہوجائیں گے۔ رئیس احمد نے کہا کہ حکومت کی منشا اور نیت کو دیکھتے ہوئے اب مسلمانوں کو پورے جوش کے ساتھ ایک پلیٹ فارم پر آنا چاہئے۔ یہ حق کی لڑائی ہے جہاں کسی بھی سازش کو کامیاب نہیں ہونے دیا جائے گا۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *