بگ باس سیزن ۱۲: تالی بجاوً انوپ جلوٹا آئے ہیں

نئی دہلی. 65 سال کے انوپ جلوٹا کو لوگوں نے بھجن گاتے ہوئے سنا اور دیکھا ہے، لیکن بگ باس میں ان کی انٹری نے سب کو حیران کر دیا. جیسے ہی جسلين سے ان کا رشتہ ظاہر ہوا بگ باس کے 12ویں سیزن کی خبر پورے ملک میں سرخیوں میں آ گئی اور ٹیلی ویژن کے ریئلٹی شو کا مقصد بھی یہی ہوتا ہے. ناظرین کے لیے اپنے گھروں میں بیٹھ کر بگ باس کے گھر کو دیکھنا اسی وقت تفریح کا سامان پیدا کرتا ہے جب وہاں کچھ ایسا سچ دکھایا جائے جو عام مڈل کلاس خاندان میں ممکن نہیں ہے. اگرچہ کئی بار وہاں دکھائی دینے والا سچ ہمارے سچ سے کوسوں دور ہوتا ہے.

انوپ جلوٹا کو 65 سال کی عمر میں اس کی اپنی 28 سالہ شاگردہ سے عشق ہو جاتا ہے اور جسلين کے مطابق انوپ اسے اتنا چاہتے ہیں کہ جب وہ کولکاتا چلی جاتی ہیں تو انوپ بھی پیچھے پیچھے چلے آتے ہیں. اسی وجہ سے ان دونوں کو بگ باس کے گھر میں جوڑے کے طور پر بلایا گیا ہے. انوپ جلوٹا سے جب پوچھا گیا کہ اگر جسلين کو کسی اور سے محبت ہو گئی تو آپ کیا کریں گے؟ انوپ جلوٹا نے بڑی سادگی سے اس کا جواب دیتے ہوئے کہا کہ یہ چڑیا اڑ جائے گی تو کوئی دوسری آ جائے گی. وہاں موجود تمام لوگوں کی تالیوں کا شور ایک ساتھ پورے ملک میں سنائی دیتا ہے. اس رشتے سے پہلے انوپ تین شادیاں کر چکے ہیں. انوپ جلوٹا نے ٹائمز آف انڈیا کو ایک انٹرویو میں بگ باس میں آنے کا سبب بتاتے ہوئے اس کی ایک وجہ یہ بھی بتائی ہے کہ اب بگ باس کو ایڈلٹ ٹائم سے پرائم ٹائم میں شفٹ کر دیا گیا ہے.

جس ملک میں رائٹ ٹو پرائیویسی کے سوال پر مسلسل بحث مباحثہ ہو رہا ہو، وہیں پرائم ٹائم میں ریئلٹی شو کے نام پر اپنی اپنی پرائیویسی کو بے نقاب کرنے کا پیسہ ملتا ہے. بگ باس کا سیٹ اپ ہی ایسا ہے جہاں سونے کے کمرے سے لے کر کچن تک کیمرہ لگا ہوتا ہے.

ہالینڈ کے ایک ٹی وی چینل پر 1999 میں پہلی بار بگ برادر کے نام سے ایک ایسا ریئلٹی شو پیش کیا گیا تھا جس نے اس وقت دنیا کے 70 ملکوں میں کامیابی کی تالیاں بٹوری تھیں. 2007 میں برطانیہ کے ایک ریئلٹی شو سیلبریٹي بگ برادر میں شلپا شیٹی کے ساتھ نسل پرستانہ تبصرے نے اس شو کو دنیا بھر میں مشہور کر دیا تھا اور اسی کے بعد بالی ووڈ میں تقریبا ختم ہو چکے شلپا کے کیریئر کو عالمی سطح پر ایک نیا عروج مل گیا تھا.

https://www.youtube.com/watch?v=aDol7INe6lo

ٹی وی کے آغاز میں اسے ایڈيٹ باکس کا نام دیا گیا تھا. اب ہم اس دور میں ہیں جہاں اسی ٹی وی پر ڈٹرجنٹ پاؤڈر یہ بول کر فروخت کیا جاتا ہے کہ”داغ اچھے ہیں” اور بسکٹ کھانے کے لیے کہا جاتا ہے کہ “سوچنا بند کرو.”

Share

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *