جشن آزادی منانے کی اجازت نہیں ملنے پر وزیر اعظم کو لکھا خط

محمد غفران آفریدی
نئی دہلی: انجمن حیدری جور باغ کے سکریٹری جنرل سید بہادرعباس نقوی نے کہا ہے مقامی تھانہ پولیس درگاہ شاہ مرداں میں جشن آزادی منا نے میں رکاوٹیں کھڑی کر رہی ہے۔ انہوں نے یہاں جور باغ میں منعقدہ پریس کانفرنس میں کہا کہ ایسا محسوس ہوتا ہے کہ مقامی پولیس بھی آر ایس ایس اور بی جے پی کے دباؤ کے ساتھ ہی سماج دشمن عناصر کی سازش کا شکار ہوگئی ہے۔ اسی لیے تو یہاں کے پولیس افسران ص اف لفظوں میں بتا رہے ہیں کہ درگاہ شاہ مرداں کے اندر مسلمانوں کو جشن آزادی منانے کی اجازت نہیں دینے کے لیے ہائی کمان سے حکم ہوا ہے۔ سید بہادر عباس نقوی نے الزام لگایا کہ سماج دشمن عناصر بڑی سازش کے تحت کام کر رہے ہیں اور علاقے کے پرامن ماحول کوخراب کر نا چاہتے ہیں۔

واضح رہے کہ گزشہ مہینے کربلا میں واقع شاہ مرداں کے احاطے میں موجود پیپل کے پیڑ کے اطراف میں شر پسند عناصر نے جبراً قبضہ کر نے کی کوشش کرتے ہوئے وہاں پوجا پاٹھ شروع کر دی تھی اور پولیس نے انہیں وہاں سے بھگانے کے بجائے اس جگہ ہی کو متنازعہ اراضی قرار دے کر بیری کیڈنگ کردی تھی۔ غورطلب ہے کہ انجمن حیدری اسی مقام پر برسوں سے جشن آزادی کا اہتمام کرتی آرہی ہے۔

بہادر عباس نقوی نے بتایا کہ گزشتہ سال بھی درگاہ شاہ مرداں میں جشن آزادی کے موقع پر سماج دشمن عناصر نے حالات کو خراب کر نے کی ناپاک کوشش کی تھی۔ اس سلسلے میں قومی اقلیتی کمیشن نے 10 اگست 2017 کو سواو موٹو نوٹس لیتے ہوئے دہلی پویس کمشنر کو ایک خط بھیجا تھا، جس میں واضح طور سے کہا گیا تھا کہ مسلمانوں کو پرچم کشائی سے نہ روکا جائے۔ قومی اقلیتی کمیشن نے پولیس کو ہر طرح سے تعاون کر نے کی ہدایت بھی دی تھی، اس کے باوجود 14 اگست 2017 کو مقامی تھا نہ کے ایس ایچ او نے جشن آزادی منا نے کی اجازت دینے سے صاف منع کر دیا تھا۔

بہادر نقوی نے حیرت کے ساتھ کہاکہ قومی اقلیتی کمیشن کے خط پر بھی پولیس جشن آزادی جیسے پروگرام کے انعقاد سے منع کر رہی ہے۔ اس کا صاف مطلب یہ ہے کہ وہ کسی طاقت کے دباؤ میں کام کر رہی ہے ۔ انہوں نے افسوس کے ساتھ کہا کہ امسال بھی پولیس جشن آزادی منانے کی راہ میں پریشانیاں کھڑی کرنے پر آمادہ ہے۔ اب تک اس نے جشن آزادی منانے کی اجازت نہیں دی ہے۔ اس کی تیاریوں پر بھی روک لگا رکھی ہے۔ مقامی تھانہ کی پولیس جیل میں ڈالنے کی دھمکیاں دے رہی ہے۔ بہادر نقوی نے ایک سوال کے جواب میں کہا کہ وزیر اعظم اور وزیر داخلہ کو خط لکھ کر حالات سے آگاہ کیا گیا ہے اور ان سے مطالبہ بھی کیا ہے کہ وہ بذات خود اس معاملہ کو حل کرائیں اور پولیس کو ہدایت جاری کریں کہ وہ مسلمانوں کو یوم آزادی کے موقع پر پرچم کشائی سے نہ روکے۔ انجمن حیدری کے ذمہ داروں نے کہا کہ جو افراد ماحول کو خراب کرنے کی کوشش کریں، اس کے خلاف فوری کارروائی کی جانی چاہیے۔ انجمن حیدری نے تمام مسلمانوں سے اپیل کی ہے کہ 15 اگست کی صبح 8 بجے ہاتھوں میں ترنگا لے کر شاہ مرداں کی طرف کوچ کریں۔

Share

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *