خاتون ٹیچر کے ساتھ بہتر سلوک کرے اتراکھنڈ حکومت: ظفرالاسلام خان

نئی دہلی : صدر دہلی اقلیتی کمیشن ڈاکٹر ظفرالاسلام خان نے تریوندرا سنگھ راوت وزیر اعلیٰ اترا کھنڈ کو خط لکھ کر اترا بہوگنا نامی خاتون ٹیچرکے ساتھ بہتر سلوک کی درخواست کی ہے۔مذکورہ خاتون عرصے سے اپنے گھر سے بہت دور ٹیچر ہے اور اب شوہر کے انتقال کے بعد اپنے گھر کے پاس کسی اسکول میں کام کرنے کی خواہش مند ہے تاکہ اپنے خاندان کا خیال رکھ سکے۔ کچھ دنوں قبل جب مذکورہ خاتون نے وزیر اعلیٰ اتراکھنڈ کو ایک جنتا دربار میں یہ درخواست پیش کی تو خاتون کے رویے سے ناراض ہوکر وزیر اعلیٰ نے نہ صرف اس کو ڈانٹا بلکہ اس کی معطلی اور گرفتاری کا آرڈر بھی دے ڈالا۔
ڈاکٹر ظفرالاسلام خان نے وزیر اعلیٰ کو اپنے خط میں لکھا ہے: ’’آپ ایک بڑے منصب پر بیٹھے ہیں۔ لوگ آپ سے سبق سیکھتے ہیں اور آپ سے امیدیں لگائے بیٹھے ہیں کہ آپ اعلیٰ معیار قائم کریں گے جس کی اتباع دوسرے لوگ کریں۔ میں آپ سے پورے احترام کے ساتھ درخواست کرنا چاہتا ہوں کہ براہ کرم مذکورہ خاتون کو اس کی عمر کے آخری حصے میں اب اس کی پسند کی جگہ ٹرانسفر کردیں، خصوصاً اس لئے کہ وہ بالفعل ایک دور دراز جگہ دس سال سروس کر چکی ہے اور اب جبکہ اس کے شوہر کا انتقال ہوگیا ہے وہ اپنے بچوں کی پرورش کرنے کے لئے اکیلی رہ گئی ہے۔ مجھے امید ہے کہ آپ عفووکرم اور مرحمت کا اعلیٰ معیار قائم کرتے ہوئے مذکورہ ٹیچر کی درخواست قبول کرلیں گے جس کی وجہ سے لوگ برسوں آپ کو یاد کریں گے‘‘۔

Share

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *