عام بجٹ: پنشن یافتہ سماج کی جانب پیش قدمی کیلئے اقدامات

پارلیمنٹ جاتے ہوئے وزیر خزانہ ارون جیٹلی
پارلیمنٹ جاتے ہوئے وزیر خزانہ ارون جیٹلی

نئی دہلی، 29فروری:مرکزی وزیر خزانہ جناب ارون جیٹلی نے آج لوک سبھا میں عام بجٹ 17-2016 پیش کرتے ہوئے کہا کہ پنشن اسکیمیں بزرگ شہریوں کو مالی تحفظ فراہم کرتی ہیں۔ انہوں نے تجویز پیش کی کہ نیشنل پنشن اسکیم (این پی ایس) کی صورت میں ریٹائرمنٹ کے وقت فنڈ کی 40 فیصد رقم نکلوانے پر یہ رقم ٹیکس سے مستثنیٰ کرنے کی تجویز پیش کی۔ ریٹائرمنٹ کے فنڈ اور ای پی ایف سمیت تسلیم شدہ پراویڈنٹ فنڈ پر بھی رقم کا 40 فیصد حصہ ٹیکس سے مستثنیٰ رہے گا۔ البتہ یہ اصول یکم مارچ 2016 کے بعد جمع کئے گئے فنڈ پر نافذ ہوگا۔ اس کے علاوہ پنشن فنڈ جو پنشن پانے والی موت کے بعد اس کے جائز وارث کو منتقل ہوگی، اس فنڈ پر بھی ٹیکس نہیں لگے گا۔
وزیر موصوف نے ٹیکس فوائد حاصل کرنے کیلئے تسلیم شدہ پراویڈنٹ اور ریٹائرمنٹ فنڈ میں آجر کے مالی تعاون کی حد 1.5 لاکھ روپے سالانہ کی تجویز پیش کی ہے۔
انہوں نے پنشن اسکیم (این پی ایس) اور ای پی ایف او کے ذریعے ملازمین کو فراہم کی جانے والی خدمات ریٹائزمنٹ کی خدمات کو سروس ٹیکس سے مستثنیٰ رکھنے کی بھی تجویز پیش کی۔ انہوں نے واحد قسط والی ریٹائرمنٹ (انشورنس )پالیسیوں پر سروس ٹیکس کو 3.5 سے کم کرکے ادا کی گئی قسط پر 1.4 فیصد کرنے کی بھی تجویز پیش کی۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *