قربانی کی اہمیت اور مسلمانوں کی ذمہ داری کے عنوان پر جلسہ

نئی دہلی، ( نامہ نگار): باڑا ہندو راؤ کے احاطہ کیدارا میں واقع مسجد حاجی محمد جان (پٹنا والہ) میں’قربانی کی اہمیت اور مسلمانوں کی ذمہ داری‘ کے عنوان پر ایک جلسے کا اہتمام کیا گیا۔ سماجی کارکن امین الدین نظامی کی صدارت میں منعقد جلسہ کا آغاز محمد اظہار کی تلاوت کلام پاک اور محمد ابو سلیم کی نعتیہ پیشکش سے ہوا۔ اس موقع پر مہمان خصوصی کے طور پر شریک جمعیۃ علماء ہند صوبہ دہلی کے اہم رکن مولوی قاری محمد آصف محمود قاسمی نے عید الاضحی کی فضیلت پر روشنی ڈالی اورعید قرباں عقیدت و احترام، امن و سلامتی اور پیار محبت کے ساتھ منانے کی اپیل کی۔ انہوں نے کہا کہ قربانی رضائے الہی کا خاص ذریعہ ہے اور عید الاضحی رب تعالی سے محبت کا درس دیتا ہے۔ مولوی آصف نے مسلمانوں سے تاکید کی کہ ’وہ گلیوں، سڑکوں یا عوامی مقامات پر قربانی بالکل نہ کریں، ضروری ہے کہ اپنے گھروں، مذبح خانوں یا مدرسوں ہی میں قربانی کا اہتمام کیا جائے۔‘ انہوں نے مزید کہا کہ ’عید قرباں کے موقع پر ممنوع جانوروں کی قربانی ہرگز نہ کریں تاکہ دوسرے فرقہ کے لوگوں کے مذہبی جذبات مجروح نہ ہوں، کیو نکہ مذہب اسلام ہر اس عمل سے گریز کر نے کی تعلیم دیتا ہے جس میں کسی کی بھی دل آزاری ہو، اس لیے مسلمان اس چیز کا خصوصی خیال رکھیں۔‘

مولوی آصف محمود خطاب کرتے ہوئے۔

قاری آصف قاسمی نے یہ بھی کہا کہ ’قربانی کے وقت محلے اور گلیوں میں صفائی کا بالکل دھیان دیں، گندگی یا دیگر آلائش ادھر ادھر نہ پھینکیں بلکہ قربانی کے بعد جانوروں کے فضلا کوڑا گاڑی یا کوڑا گھر میں ڈالیں اور اگر ممکن ہو تو زیر زمین دفن کر دیں تاکہ گندگی و تعفن وغیرہ نہ پھیلے۔‘ انہوں نے عوام الناس سے پر زور اپیل کی کہ قربانی کرتے ہوئے جانور کی تصویر یا سیلفی وغیرہ نہ کھینچی جائے اور نہ ہی ویڈیووائرل کی جائے کیونکہ یہ عمل اسلام میں قطعا جائز نہیں ہے۔ داعئی اسلام محمد پرویز اختر نے بھی اظہار خیال کرتے ہوئے مسلمانوں کو رضائے الہی میں وقت صرف کر نے کی ضرورت پر زور دیا اور کہا کہ مسلمان ہمہ وقت ایک دوسرے سے نیکیوں میں سبقت لے جا نے کی کوشش و فکر کریں، ساتھ ہی قربانی کا عظیم تہوار سب کے ساتھ مل جل کر مسرت و محبت کے ساتھ منائیں۔ جلسے کی نظامت مولوی محمد مشاہد احمد حسینی نے کی جبکہ اظہار تشکر حافظ غفران نے کیا۔ جلسہ کو کا میاب بنانے میں ماسٹر زاہد حسین، حاجی محمد نعیم، چودھری آصف، حاجی ظہیر، حاجی حامد، قاری برہان سلیمانی، عزیرنعیم، حافظ مرتضی، محمد مجتبیٰ و دیگر نے اہم کردار ادا کیا۔

Share

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *