قومی اردو کونسل میں تھوک خریداری اسکیم پینل کی میٹنگ

کتابوں کے مالی تعاون کی رقم میں اضافہ کیا جائے گا: پروفیسر ارتضیٰ کریم

NCPUL Meeting_17 Feb 16

نئی دہلی، ۱۷ فروری: قومی اردو کونسل کے تھوک خریداری اسکیم پینل کی میٹنگ میں بڑھتی مہنگائی اور اشاعتی اخراجات کو دیکھتے ہوئے قلمکاروں کو دی جانے والی مالی اعانت کی رقم میں اضافے کا فیصلہ کیا گیا ہے، جس کا نفاذ آئندہ مالی سال سے ہوگا۔ کونسل کے ڈائرکٹر پروفیسر ارتضیٰ کریم نے اس موقع پر کہا کہ اضافے کا فیصلہ صرف اس اسکیم تک محدود نہیں ہے بلکہ اس کا نفاذ کونسل کے زیر نگرانی چلنے والی ساری اسکیموں پر ہوگا۔ اس میٹنگ میں اردو، عربی و فارسی کی تقریباً ۲۵۰ سے زائد کتابوں کی تھوک خریداری کو منظوری دی گئی، جن میں تخلیقی ادب، شاعری، سوانح، ادب اطفال، لغات، سائنسی و سماجی علوم، جنرل نالیج، ادبی تنقید، مذہبی کتابیں اور صحافت کے علاوہ ملک کے مختلف حصوں سے شائع ہونے والے ادبی رسائل و جرائد شامل ہیں۔

پینل کی صدارت کرتے ہوئے جناب چندر بھان خیال نے کہا کہ قومی اردو کونسل کا یہ فیصلہ قابل ستائش ہے۔ اس سے اردو کے مصنفین کو خاصی راحت ملے گی۔ انھوں نے یہ بھی کہا کہ ان نئے مصنفین کو خاص طور پر ترجیح دی جانی چاہیے جو اقتصادی طور پر کمزور ہیں۔ اس فیصلے سے ان مصنفین کا حوصلہ بڑھے گا اور انھیں کتابوں کی اشاعت میں مالی دشواریوں کا سامنا نہیں کرنا پڑے گا۔ واضح رہے کہ قومی اردو کونسل اس اسکیم کے تحت پورے ہندوستان سے شائع ہونے والی کتابیں خرید کر ملک کے طول و عرض میں پھیلے کتب خانوں میں بطور ہدیہ ارسال کرتی ہے تاکہ عام اردو قارئین تک ان کتابوں کی رسائی کو ممکن بنایا جا سکے۔

میٹنگ میں پروفیسر انوار الدین، پروفیسر نعمان خا ن، پروفیسر علیم اشرف خان، جناب چودھری ابن انصیر، ڈاکٹر محمود فیاض، محترمہ صادقہ نواب سحر، محترمہ ثروت خان، حاجی محمد اقبال خان کے علاوہ کونسل کے پرنسپل پبلی کیشن آفیسر ڈاکٹر شمس اقبال، محترمہ شمع کوثر یزدانی (اسسٹنٹ ڈائرکٹر اکیڈمک)، جناب فیروز عالم (اسسٹنٹ ایجوکیشن آفیسر)، محترمہ ساجدہ بیگم، فرح دیبا، اقبال حسین اور ڈاکٹر شاہد اختر نے بھی شرکت کی۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *