مختار عباس نقوی کی انڈیا اگینسٹ ٹیرورزم کے وفد سے ملاقات

مختار عباس نقوی، مرکزی وزیر برائے پارلیمانی و اقلیتی امور
مختار عباس نقوی، مرکزی وزیر برائے پارلیمانی و اقلیتی امور

نئی دہلی، ۲ فروری (پریس ریلیز): مرکزی وزیر برائے پارلیمانی و اقلیتی امور مختار عباس نقوی نے آج یہاں کہا کہ سیکولرازم اور قومیت کی طاقت دہشت گردی اور انتہاپسندی کو شکست دینے کا مضبوط ہتھیار ہے۔
محترم نقوی نے کہا کہ ہندوستان میں فرقہ وارانہ ہم آہنگی اور سیکولرازم کا چولی دامن کا ساتھ ہے۔ ہمیں اس جمہوری وراثت کی حفاظت کرنی چاہیے اور اسے سماج کی ترقی، بھائی چارے، اتحاد کا ہتھیار بنا کر ملک میں ’بکھراؤ۔ ٹکراؤ‘ پیدا کرنے والی طاقتوں کے خلاف استعمال کرنا چاہیے۔
محترم نقوی نے یہاں نوجوانوں کی تنظیم ’’انڈیا اگینسٹ ٹیرورِزم‘‘ کے ایک وفد سے ملاقات کے دوران کہا کہ دہشت گردی کو کسی بھی مذہب سے جوڑنا غلط ہے۔ دہشت گردی کو کسی مخصوص مذہب سے جوڑنے سے دہشت گرد اپنی چال میں کامیاب ہو جائیں گے۔ ہمیں اس بات کا دھیان رکھنا ہوگا۔ ہمیں ہوشیار رہنا ہوگا کہ دہشت گردوں، انتہا پسندوں کی سماج کو بانٹنے کی سیاست کو اتحاد اور ہم آہنگی کی طاقت سے شکست دینا ہے۔
محترم نقوی نے کہا کہ ’’سیکولرازم کا سیاسی استحصال‘‘ اور ’’کمیونلزم کا سیاسی شگوفہ‘‘ بند ہونا چاہیے اور ہمیں ملک کی شاندار تہذیبی وراثت اور آئینی قدروں کی مضبوط راہ پر چلنا ہوگا، تاکہ ملک کی ’’سیکولر اور آئینی ہیئت‘‘ کو محفوظ رکھا جا سکے۔
محترم نقوی نے کہا کہ ’’سلیکٹو سیکولرازم‘‘ ہندوستان کے سیکولر ڈیموکریٹک کیرکٹر کے لیے ایک بڑا مسئلہ ہے۔ سیکولرازم کو سماج سے جوڑنے اور ہم آہنگی کا ہتھیار بنانے کے بجائے ہمارے کچھ ’’سیکولرازم کے سیاسی سورماؤں‘‘ نے ’’سیاسی استحصال‘‘ کا ہتھیار بنا لیا ہے، جس کی وجہ سے اس کی بنیادی آئینی روح مجروح ہوئی ہے۔
محترم نقوی نے کہا کہ ہندوستان کو دنیا کی سب سے بڑی جمہوریت ہونے کے ساتھ ساتھ عظیم سیکولر ریاست ہونے کا اعزاز حاصل ہے۔ مختلف مذاہب، زبان، لباس اور علاقائی تہذیب کے باوجود ہمارا ملک اور لوک ’’مذہبی فتووں، پیغاموں‘‘ سے نہیں، آئینی قدروں اور اصولوں سے چلتے ہیں۔
محترم نقوی نے کہا کہ دہشت گردی اور انتہاپسندی کے خلاف لڑائی میں نوجوانوں کا اہم رول ہے۔ نوجوانوں کو دہشت گرد تنظیموں کے شیطانی منصوبوں سے خود بھی محتاط رہنا ہوگا اور انسانیت کے دشمن دہشت گرد تنظیموں کے خلاف قومی سطح پر سماج مں ’’بیداری کی جنگ‘‘ چھیڑنی ہوگی۔
محترم نقوی نے کہا کہ مرکز کی وزیر اعظم نریندر مودی کی قیادت والی این ڈی اے سرکار نے دہشت گردی کے خلاف ’’زیرو ٹالیرنس‘‘ کی پالیسی اپنائی ہے، جس سے دہشت گرد اور ان کے آقا حیران و پریشان ہیں۔ ایسی حیران و پریشان طاقتوں کی بزدلانہ کوشش ملک کے اتحاد کی طاقت سے ناکام کی جا سکتی ہے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *