مشرقی دلی میونسپل کارپوریشن کے ۷۱۰ ورکروں کو راحت

نئی دہلی : دہلی اقلیتی کمیشن کے تدخل پر مشرقی دہلی میونسپل کارپوریشن میں بیس سال سے کام کرنے والے سات سو دس (۷۱۰) ڈومیسٹک بریڈرچیکرز کو راحت ملی ۔ یہ مزدور پچھلے بیس سال سے مشرقی دہلی میں مچھر وں کی افزائش نیز ملیریا اور ڈینگی کو روکنے کے کام پر لگے ہوئے ہیں۔ کارپوریشن ان کی سروس میں چار ماہ کا بریک دینے جارہی تھی لیکن کمیشن کے نوٹس پر اب اس نے ان مزدوروں کو صرف ایک دن کا بریک دے کر دوبارہ بحال کردیا ہے۔ یوں ۷۱۰ خاندان تباہ ہونے سے بچ گئے کیونکہ چار ماہ بغیر تنخواہ کے رہنا ان مزدوروں کے لئے ایک عذاب تھا۔
کمیشن نے ان مزدوروں کی دوسری شکایت پر مشرقی دہلی میونسپل کارپوریشن کو مزید نوٹس جاری کیا ہے کہ ان ۷۱۰ مزدوروں کو کیوں ریگولرائز نہیں کیا گیا جبکہ ۱۹۸۷ میں دہلی ہائی کورٹ کے جسٹس پی کے بہاری کے حکم پر اسی طرح کے مزدوروں کی ملازمت کو مستقل کیا گیا تھا۔اس کے بعد اپریل ۲۰۰۴ میں دہلی ہائی کورٹ مزیدفیصلہ کرچکا ہے کہ ۱۹۸۷ کے حکم کے مطابق مذکورہ کام پر لگے نئے مزدوروں کو بھی مستقل کیا جائے لیکن میونسپل کارپوریشن نے اب تک اس حکم پر عمل نہیں کیا ہے۔

Share

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *