معزول چیف قانونی مشیر نے جامعہ ملیہ اسلامیہ میں قانونی امور کی مد میں تقریباً ۲ کروڑ روپے خرچ کیے: آر ٹی آئی

Jamia Press Release_RTI
نئی دہلی، ۲ فروری: جامعہ ایڈمنسٹریٹو اسٹاف ایسوسی ایشن کے ذریعہ جاری کردہ ایک پریس ریلیز میں کہا گیا ہے کہ ۲۲ دسمبر ۲۰۱۵ کو آر ٹی آئی کے تحت حاصل کردہ معلومات کے مطابق، معزول چیف قانونی مشیر جناب عتیاب صدیقی نے جامعہ ملیہ اسلامیہ کی جانب سے ۲۰۱۰ سے ۲۰۱۴ کے درمیان قانونی معاملات میں تقریباً ۲ کروڑ روپے خرچ کا دعویٰ کیا ہے۔
امر واقعہ یہ ہے کہ انھوں نے حقائق کو توڑ مروڑ کر پیش کا اور یونیورسٹی انتظامیہ کو غیر دانشمندانہ مشورے دیے، جس نے لاکھوں طلبہ کے مستقبل کو داؤ پر لگا دیا۔
یونیورسٹی انتظامیہ نے ان کی قانونی زندگی کا یہ پہلو لاکھوں روپے کی بے ضابطگیوں اور بے قاعدگیوں کے ساتھ روشنی میں لایا ہے، جسے انھوں نے طلبہ کے خلاف غلط مقدمات بناکر پیش کیے ہیں۔ علاوہ ازیں ان کی اس مذموم حرکت سے ادارہ اور خود ان کی شبیہ خراب ہوئی ہے۔
برطرفی کے بعد جناب عتیاب صدیقی نے، جنہیں یونیورسٹی سے اب کسی مزید منفعت کی امید نہیں ہے، انھوں نے اخبارات میں غلط بیانی اور جھوٹی موٹی کہانیاں بناکر عظیم تاریخی ادارہ کی تقدیس کو نقصان پہنچانے کا راستہ اختیار کیا ہے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *