ملک سے بغاوت کے معاملے میں گرفتار گیلانی کو ملی ضمانت

SAR Geelani
تصویر: ایس اے آر گیلانی کے فیس بک وال سے

نئی دہلی، ۱۹ مارچ: دہلی کی ایک عدالت نے ملک سے بغاوت کے معاملے میں گرفتار کیے گئے دہلی یونیورسٹی کے ذاکر حسین کالج کے سابق پروفیسر ایس اے آر گیلانی کو آج ضمانت پر رہا کر دیا۔ عدالت نے سماعت کے بعد فیصلہ کو آج کے لیے محفوظ کر لیا تھا۔

گیلانی کو دہلی کے پریس کلب میں ایک پروگرام کے دوران مبینہ طور پر ’’پاکستان زندہ باد‘‘ کا نعرہ لگانے اور افضل گورو کی تعریف کرنے کے الزام میں گزشتہ ۱۶ فروری کو گرفتار کیا تھا۔ بعد میں گیلانی کی ذریعہ عدالت میں داخل کی گئی عرضی کو ۱۹ فروری کو خارج کر دیا گیا تھا۔

دہلی پولس نے ۱۰ فروری کو پریس کلب میں منعقدہ ایک پروگرام کے دوران سال ۲۰۰۱ میں پارلیمنٹ حملے کے مجرم، افضل گورو، جسے بعد میں پھانسی دے دی گئی تھی، کی حمایت میں نعرے لگانے والے ایس اے آر گیلانی اور دیگر نامعلوم لوگوں کے خلاف خود ہی نوٹس لیتے ہوئے ایک ایف آئی آر درج کی تھی، جس کے بعد گیلانی کو ۱۶ فروری کو گرفتار کر لیا گیا تھا۔

ایف آئی آر درج کرنے کے بعد دہلی پولس نے اس سلسلے میں دہلی یونیورسٹی کے پروفیسر علی جاوید سے بھی پوچھ گچھ کی تھی، جو کہ پریس کلب کے ایک رکن ہیں اور انھوں نے ہی اس پروگرام کے لیے دو دنوں کے لیے ایک ہال بُک کرایا تھا۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *