ملک کی سیاست میں “دیسپا” کی انٹری

نئی دہلی: جمہوریت میں ووٹروں کو اپنی طاقت دکھانے کا موقع الیکشن ہی وقت ملتا ہے۔ اسی طرح سیاسی پارٹیاں اور سماجی گروپ بھی اپنا اپنا حق حصہ مانگنے یا عوام کے حقوق کی لڑائی لڑنے کے لیے الیکشن ہی کے موسم میں زیادہ سرگرم ہوتی ہیں۔ یہی وجہ ہے کہ لوک سبھا کے اگلے الیکشن سے پہلے بہت سی پارٹیاں سرگرم ہوگئی ہیں تو چند ایک نئی پارٹی بھی وجود میں آئی ہے۔ ان ہی میں سے ایک ہے “دیش سیوا پارٹی آف انڈیا” (دیسپا)۔ اس پارٹی کے بانی صدر اقبال امروہی ہیں جبکہ سکریٹری جنرل کی ذمہ داری فرمان حیدر کو سونپی گئی ہے۔

دیش سیوا پارٹی آف انڈیا کی تشکیل کا اندازہ اسی سے لگایا جا سکتا ہے کہ اس کے قیام کا اعلان یوم آزادی کو کیا گیا۔ دیسپا کے قومی صدر معروف صحافی ہیں اس لیے ان سے بجا طور پر یہ امید کی جا رہی ہے کہ انہوں نے ملک کے حالات کو دیکھتے ہوئے ہی نئی ذمہ داری قبول کی ہے۔ اس دوران پارٹی کے قومی سکریٹری جنرل فرمان حیدر نے کہا ہے کہ دیسپا کاغذ پر سمٹ کر رہ جانے والی پارٹی نہیں بنے گی اور لوک سبھا کے آئندہ انتخابات میں یہ اپنے امیدوار اتارنے کا ارادہ رکھتی ہے.

Share

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *