پٹنہ کے آسرا گھر کی دو لڑکیوں کی موت

پٹنہ: بہار کی راجدھانی کے راجیونگر علاقہ میں واقع آسرا گھر کی دو لڑکیوں کی موت ہوگئی ہے۔ پولیس کے مطابق دونوں لڑکیوں کی موت ہفتہ کو شام میں پی ایم سی ایچ میں علاج کے دوران ہوئی تھی لیکن آسرا گھر کے ناظم نے اس کی اطلاع نہیں دی تھی۔ بتایا جاتا ہے کہ ایک لڑکی کی عمر ۱۷؍ سال تھی جبکہ دوسری تقریباً ۴۰؍ سال کی تھی۔

قابل ذکر ہے کہ اسی آسرا گھر سے جمعہ کو صبح صبح چار لڑکیاں فرار ہونے کی کوشش کر رہی تھیں لیکن عین موقع پر آس پاس کے لوگوں نے دیکھ لیا تھا جس کے بعد ان لڑکیوں کو واپس لایا گیا ۔یہ لڑکیاں آسرا گھر کا گرل کاٹ کر بھاگنے کی کوشش کررہی تھیں۔ اس معاملے میں راجیو نگر تھانہ کی پولیس نے آسرا گھر کا معائنہ کیا تھا اور وہاں کئی افراد سے پوچھ گچھ بھی کی تھی۔ پولیس نے آسرا گھر کے ناظم چیتن سے بھی پوچھ گچھ کی تھی۔ اس واقعہ کے دوسرے ہی دن دو لڑکیوں کی موت نے آسرا گھر وں کے رکھ رکھاؤ پر بڑا سوال کھڑا کر دیا ہے۔

یہ سوال اس لیے بھی بڑا ہے کیونکہ مظفرپور آسرا گھر کے تعلق سے جو وحشت ناک انکشافات روز بروز ہورہے ہیں، وہ بہار کے متعدد اضلاع میں بے سہارا لڑکیوں اور لڑکوں کو سہار ا دینے کے لیے چلائے جارہے آسرا گھروں کی تصاویر کو اور بھی بھیانک بنارہے ہیں۔ آسرا گھروں سے آنے والی خبریں بتارہی ہیں کہ لڑکیوں کا جنسی استحصال منظم طریقے سے اور سرکاری خرچ پر ہورہا تھا ۔ اس میں صرف سماج دشمن عناصر ہی شامل نہیں تھے بلکہ بے سہارا لڑکیوں کو سہارا دینے کے ذمہ دار افسران اور سیاستدان بھی گنگا کو میلی کرتے رہے ہیں۔

Share

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *