کونسل طب کا جامع نصاب تیار کرے گی: پروفیسر ارتضیٰ کریم

DSC_0842

نئی دہلی، ۹ مئی (پریس ریلیز): قومی کونسل برائے فروغ اردو زبان، اہم طبی موضوعات اور طب سے متعلق نصابی کتابوں کو ترجیحی طور پر شائع کرنے کی ضرورت محسوس کر رہی ہے۔ بیس (۲۰) سے زائد مضامین پر طبی نصاب تیار کرنے کی طرف پیش رفت ہوئی ہے، جس میں مختلف باب کے لیے الگ الگ ماہرین کی مدد لی جا رہی ہے۔ آدھے سے زیادہ حصوں کو پورا کر لیا گیا ہے اور اس سلسلے میں تین کتابیں بھی بہت جلد منظر عام پر آجائیں گی۔ اس کے علاوہ ماہرین طب کے پاس ادبیات سے متعلق جو بھی کتابیں موجود ہیں حوالہ جاتی کتب کی صورت میں کونسل انھیں شائع کرے گی، تاکہ طلبہ زیادہ سے زیادہ استفادہ کر سکیں۔

یہ باتیں قومی اردو کونسل کے ڈائرکٹر پروفیسر ارتضیٰ کریم نے کونسل کے صدر دفتر میں منعقدہ یونانی میڈیسن پینل کی میٹنگ میں کہیں۔ انھوں نے مزید کہا کہ یہ سارے پروجیکٹ ۲۰۱۱ کے ہیں، جس میں کافی تاخیر ہو چکی ہے۔ اب کونسل فعالیت کا ثبوت دیتے ہوئے بہت جلد اپنے اہداف کو پانے میں کامیاب ہو گی۔ اس پینل کی صدارت ڈاکٹر منور حسین نے کی۔ اس موقع پر پروفیسر حکیم سید ظل الرحمن نے میٹنگ میں کئی اہم نکات کو زیر بحث لاتے ہوئے کہا کہ طب سے متعلق جتنی بھی کتابیں ہیں وہ اردو میں ہیں اور کونسل اس جانب پوری توجہ کے ساتھ کام کر رہی ہے۔ انھوں نے کہا کہ اگر مکمل نصاب تیار کر لیا گیا تو کونسل کا طب یونانی کی دنیا میں ایک بڑا کارنامہ ہوگا۔ خصوصی مدعو پروفیسر نعیم اے خان نے کہا کہ ایسے پروجیکٹ میں نئے لکھنے والوں کو شامل کرنے کی ضرورت ہے تاکہ اس میں مزید تیزی لائی جا سکے۔ اس بات پر دیگر ارکان نے بھی اظہار اتفاق کیا۔

میٹنگ میں پروفیسر حکیم سید ظل الرحمن، پروفیسر زین العابدین، پروفیسر نعیم اے خان، ڈاکٹر منور حسین، ڈاکٹر ایس کے اے وحید، جناب محمد علی مرزا، ڈاکٹر شبیر احمد، ڈاکٹر سیما اکبر اور کونسل کے پرنسپل پبلی کیشن آفیسر ڈاکٹر شمس اقبال، محترمہ شمع کوثر یزدانی (اسسٹنٹ ڈائرکٹر، اکیڈمک)، جناب فیروز عالم، محترمہ ذیشان فاطمہ اور ڈاکٹر شاہد اختر نے بھی شرکت کی۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *