گرلس شیلٹر ہوم معاملے میں آیا بڑا موڑ

پٹنہ: بہار کے مظفرپور میں واقع گرلس شیلٹر ہوم میں لڑکیوں کے جنسی استحصال کے معاملے میں وزیر اعلی نتیش کمار کی حکومت میں سماجی فلاح کی وزیر منجو ورما نے بدھ کو دو پہر بعد اپنے عہدے سے استعفی دے دیا. ذرائع کے مطابق تفتیش کے دوران جب یہ معلوم ہوا کہ گرلس شیلٹر ہوم کے اہم ملزم برجیش ٹھاکر اور منجو ورما کے شوہر چندیشور ورما کے درمیان اس سال جنوری سے مئی تک 17 بار موبائل فون پر بات ہوئی ہے اور چندیشور ورما 9 بار مظفر پور گئے ہیں، تو پھر اس کے بعد وزیر اعلی نتیش کمار کے پاس اپنی وزیر سے استعفی لینے کے علاوہ کوئی چارہ نہیں تھا. وزیر اعلی نتیش کمار نے بدھ کو وزیر منجو ورما کو طلب کیا اور ان سے استعفی دینے کو کہا. میڈیا میں آنے والی خبروں کے مطابق منجو ورما استعفی دینے کے لیے تیار نہیں تھیں، لیکن وزیر اعلی اپنے فیصلے پر اڑے رہے. نتیجہ کے طور پر منجو ورما کو استعفی دینا پڑا.

منجو ورما نے استعفی دینے کے بعد کہا ہے کہ انہوں نے اپنی مرضی سے اس کا فیصلہ کیا ہے. انہوں نے میڈیا سے بات کرتے ہوئے کہا: میں آج بھی کہہ رہی ہوں کہ میرے شوہر بے قصور ہیں. میں پہلے بھی کہہ چکی ہوں کہ میں ایک سیاسی چہرہ ہوں اور جس عہدے پر تھی، اس کی وجہ برجیش ٹھاکر سے بھی بات ہوتی تھی. میرے شوہر کی بھی برجیش ٹھاکر سے بات ہوتی تھی. لیکن یہ کس کو معلوم تھا  کہ وہ گرلس شیلٹر ہوم میں کیا کیا کرتا تھا،.

غور طلب ہے کہ وزیر منجو ورما کے شوہر اور مظفر پور گرلس شیلٹر ہوم کے ناظم اور معاملے کے اہم ملزم برجیش ٹھاکر کے باہمی تعلق کے اجاگر ہونے کے بعد سے آر جے ڈی اور کانگریس کے علاوہ بی جے پی کے بھی کئی لیڈر منجو ورما کے استعفی کا مطالبہ کرتے رہے تھے. لیکن منجو ورما اور خود وزیر اعلی کا خیال تھا کہ جب تک الزام ثابت نہیں ہو جاتا، استعفی دینے کا کوئی مطلب نہیں ہے.

Share

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *