گوگل کا مدھو بالا کو خراج عقیدت

ممبئی: گوگل نے معروف فلم اداکارہ مدھو بالا کو ان کے یوم پیدائش 14فروری کے موقع پر ڈوڈل بنا کر خراج  عقیدت پیش کیا ہے۔ مدھو بالا کا اصلی نام ممتاز جہاں بیگم تھا۔ دہلی میں 14 فروری 1933 کو پیدا ہونے والی ممتاز جہاں بیگم نے صرف 9 سال کی عمر میں 1942 میں بسنت نامی فلم سے ہندوستانی سنیما میں قدم رکھا لیکن ان کے کیریئر کی اصل ابتدا راج کپور کے ساتھ 1947 میں آنے والی فلم نیل کمل سے ہوئی۔ اس وقت وہ محض 14 سال کی تھی۔ مدھو بالا نے محل، چلتی کا نام گاڑی، بے قصور، ترانہ، مغل اعظم، امر اور ہوڑہ برج سمیت کم و بیش 70 فلموں میں اپنی اداکاری  کے جوہر دکھائے۔ مغل اعظم میں ان کی اداکاری کو شاہکار کی حیثیت حاصل ہے۔

اپنے حسن اور بے مثال فن کے مشہور ممتاز جہاں بیگم کی ذاتی زندگی پریشانیوں سے گھری رہی۔ انہوں نے طویل بیماری کے بعد 23 فروری 1969 کو آخری سانس لی۔ ان کی آخری فلم جلوہ بعد از مرگ ریلیز ہوئی۔ مدھو بالا کی شادی کشور کمار کے ساتھ ہوئی تھی۔ مدھو بالا نے راج کپور اور کشور کمار کے علاوہ دلیپ کمار، اشوک کمار اور دیو آنند جیسے اداکاروں کے ساتھ کام کیا تھا۔ بسنت سے شروع ہو کر جلوہ پر مدھو بالا کی زندگی اختتام پذیر ہوئی۔ ممتاز جہاں بیگم تو بہت پہلے

رخصت ہو چکی تھی۔

Facebook Comments
Spread the love
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  

Leave a Reply