ہمت نہیں ہاری خون سے لت پت طالبہ نے

1

لکھنؤ، ۲۱ مئی (حنیف علیمی): انسان کا ضمیر جب مر جاتا ہے تو وہ اچھے اور برے کا فرق بھول کر حیوانیت کی ساری حدیں پار کردیتا ہے۔ ایسا ہی ایک واقعہ رونما ہوا لکھنؤ کے ایک اپارٹمنٹ کی لفٹ میں۔ دیر رات ۱۱ویں کلاس کی ایک طالبہ کے ساتھ ایک شخص نے زنا کرنے کی کوشش کی۔ لفٹ کا دروازہ کھلتے ہی مجرم بھاگنے لگا، تو طالبہ نے اس کا پیر پکڑ لیا اور دانت سے کاٹنے لگی۔ مجرم نے پاس میں رکھا گملا اس کے سر پر دے مارا، لیکن طالبہ نے ہمت نہیں ہاری اور خون میں لت پت ہونے کے باوجود اسے دبوچے رہی۔ خود کو پھنستے ہوئے دیکھ کر اس شخص نے طالبہ کے چہرے اور سر پر اینٹ سے اس وقت تک مارا، جب تک وہ گر نہیں گئی۔ طالبہ کو نازک حالت میں آئی سی یو میں داخل کرایا گیا ہے۔ اس کے سر پر ۵۰ ٹانکے آئے ہیں۔

نامہ نگار کے مطابق معامہ راجدھانی کے پی جی آئی علاقے کے سوشانت گولف سٹی میں واقع کرسٹل پیراڈائز اپارٹمنٹ میں بروز بدھ تقریباَ رات آٹھ بجے کا ہے۔ طالبہ ایف ٹاور کے چوتھی منزلہ پر واقع دکان سے کچھ سامان لینے جارہی تھی۔ اسی ٹاور کی دوسری منزل میں رہنے والا شوبھت لفٹ سے نیچے جارہا تھا۔ وہ جیسے ہی باہر نکلنے لگا طالبہ لفٹ میں داخل ہوئی۔ اسے اکیلا دیکھ کر شوبھت دوبارہ لفٹ میں گھس گیا اور دروازہ بند ہوتے ہی دست درازی کی کوشش کی، تو طالبہ نے دانت سے کاٹا۔ اسی درمیان لفٹ دوسری منزل پر پہنچ گئی اور جیسے ہی دروازہ کھلا، تو طالبہ کسی طرح مدد کے لئے چیختی چلاتی باہر بھاگی۔ شوبھت نے معاملہ بگڑتے دیکھ کر پاس رکھا گملا اس کے سر پر مار دیا، جس سے طالبہ زمین پر گر گئی۔ خون سے لت پت طالبہ نے پھر بھی بھاگتے ملزم کو پکڑ لیا۔ اس سے غصائے شوبھت نے پاس پڑی اینٹ سے اس کے چہرے پر کئی حملے کئے اور اسے مرا ہوا سمجھ کر بھاگ گیا۔ اسی درمیان وہاں لوگ آگئے اور فوراً طالبہ کو اسپتال میں داخل کرایا۔ ڈاکٹروں نے طالبہ کی حالت نازک بتاتے ہوئے اسے آئی سی یو میں داخل کر دیا ہے۔ خبر موصول ہونے تک مجرم گرفتار نہیں ہوا ہے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *