یوپی میں بھی بی جے پی کا برا حال ہو گا: غلام غوث

حامد رضا
مہسی، (مشرقی چمپارن):
بہار میں فرقہ پرستی کا کارڈ فیل ہونے کے باوجود بھارتیہ جنتا پارٹی وہی پالیسی یوپی کے الیکشن میں اپنا رہی ہے اور وہاں بھی وہ فیل ہو جائے گی. مذکورہ باتیں بہار قانون ساز کونسل کے سابق اپوزیشن لیڈر اور بیس نکاتی نفاذ کمیٹی کے ڈپٹی چیئرمین پروفیسر غلام غوث نے کہیں. انہوں نے ہفتہ کو یہاں ڈھرگاواں میں واقع محمد سین الدين کی رہائش گاہ پر ایک پریس کانفرنس میں صحافیوں سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ بی جے پی کو بہار اسمبلی انتخابات سے سبق لینا چاہیے.

پروفیسر غلام غوث
پروفیسر غلام غوث

انہوں نے کہا کہ ترقی کا نعرہ لگانے والی بی جے پی کے ایجنڈے سے یوپی انتخابات میں ترقی غائب ہے. آج بی جے پی کو یوپی انتخابات کے درمیان طلاق شدہ مسلم خواتین سے ہمدردی ہونے لگی ہے جبکہ گجرات فسادات کے وقت ریاست میں مودی جی کی سرکار تھی تب حاملہ مسلم خواتین کا پیٹ چیر کر بچے اور خواتین کو مار دیا جاتا تھا اور اس کی موت پر جشن بھی منایا تھا. اس وقت بی جے پی کی انسانیت کہاں مر گئی تھی.

پروفیسر غوث نے کہا کہ بی جے پی تو صرف اقتدار کے لیے سماجی ہم آہنگی بگاڑنا جانتی ہے. اس کو ملک کے امن و امان اور ترقی سے کوئی لینا دینا نہیں ہے.

جے ڈی یو لیڈر غلام غوث کا کہنا ہے کہ مرکزی حکومت ہر سال دو کروڑ افراد کو نوکری دے رہی تھی، لوگوں کو ۱۵-۱۵ لاکھ روپے مہیا کرا رہی تھی۔ اس کے سبھی وعدے آج بھی ایک پہیلی ہیں. انہوں نے کہا کہ بی جے پی حکومت تمام محاذ پر ناکام ثابت ہوئی ہے.

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *