افغانستان نے پھر دل جیتا، انگلینڈ نے میچ

15-runs2نئی دہلی، ۲۳ مارچ (سی این ایم): انگلینڈ نے بدھ کو یہاں فیروز شاہ کوٹلہ میدان پر کھیلے گئے آئی سی سی ٹی -۲۰ ورلڈ کپ کے سپر-۱۰ مرحلہ کے گروپ -۱ مقابلے میں افغانستان کو ۱۵ رنوں سے ہرا دیا. اس مسلسل دوسری جیت کے ساتھ انگلینڈ نے خود کو سیمی فائنل کی دوڑ میں برقرار رکھا ہے جبکہ مسلسل تیسری شکست کے ساتھ افغان ٹیم کی مہم ختم ہو گئی ہے. افغان ٹیم نے اپنی عمدہ گیند بازی کے دم پر انگلینڈ کو ۱۴۲ رنوں کے اسکور پر روک دیا تھا لیکن وہ پہنچ کے قابل اس ہدف کو پار کرنے سے پہلے ہی چاروں خانہ چت ہو گئی. افغان ٹیم تمام کوششوں کے بعد بھی ۲۰ اووروں میں ۹ وکٹ گنوا کر صرف ۱۲۷رن ہی بنا سکی.

انگلینڈ کی جانب سے لیام پلنکٹ نے عمدہ گیند بازی کرتے ہوئے چار اوور میں صرف ۱۲ رن دیے جس میں میچ کا واحد میڈن اوور بھی شامل ہے. ڈیوڈ ویلی نے ۲۳ رن دے کر دو کامیابی حاصل کی جبکہ عادل رشید کو بھی دو وکٹ ملے.

شفیق اللہ (ناٹ آؤٹ ۳۵) کے سوا افغان ٹیم کی جانب سے کوئی بھی بلے باز اپنی چھاپ نہیں چھوڑ سکا. محمد شہزاد (۴)، کپتان اصغر اسٹےنکزئی (۱) اور گلبدن نائب (۰) سستے میں آؤٹ ہوئے جبکہ نور علی جادران نے ۱۷، راشد خان ۱۵، محمد نبی ۱۲، سمیع اللہ شینواري ۲۲ اور نجیب اللہ جادران ۱۴ رن بنانے میں کامیاب رہے.

شفیق اللہ نے 20 گیندوں کا سامنا کر کے چار چوکے اور دو چھکے لگائے. افغان ٹیم کی جانب سے سب سے بڑی شراکت ۲۵ رنوں کی رہی.

اس سے پہلے، معین علی (ناٹ آؤٹ ۴۱) اور ڈیوڈ ویلی (ناٹ آؤٹ ۲۰) نے آٹھویں وکٹ کے لیے ۵۷ رن جوڑے جس کی بدولت انگلینڈ نے افغانستان کو ۱۴۳ رنوں کا ہدف دیا.

انگلینڈ نے ۳ء۱۴ اووروں میں ۸۷ رن پر اپنے سات وکٹ گنوا دیے تھے اور اس کے ۱۰۰ کے قریب بھی پہنچنے کی امید نہیں دکھائی دے رہی تھی لیکن معین اور ویلی نے ۳۳ گیندوں پر تابڑ توڑ انداز میں کھیلتے ہوئے ۵۷ رن بنا ڈالے.

معین نے ۳۳ گیندوں کا سامنا کر کے چار چوکے اور ایک چھکا لگایا جبکہ ویلی نے ۱۷ گیندوں پر دو چھکے لگائے. اس سے ٹھیک پہلے معین نے کرس جارڈن (۱۵) کے ساتھ ساتویں وکٹ کے لیے ۲۸ رنوں کی ساجھیداری کر اپنی ٹیم کو انتہائی مشکل حالات سے نکالا تھا.

انگلینڈ کی شروعات اچھی نہیں رہی. جنوبی افریقہ کے خلاف طوفانی اننگ کھیلنے والے جیسن رائے (۵) کو امیر حمزہ نے تیسرے اوور کی آخری گیند پر بولڈ کر دیا.

اس کے بعد جیمز ونس (۲۲) نے وانکھیڑے اسٹیڈیم میں جنوبی افریقہ کے خلاف میچ جتانے والے جوئے روٹ (۱۲) کے ساتھ اننگ کو سنوارنے کا کام شروع کیا.

دونوں اس میں کافی کامیاب بھی ہوتے دکھائی دے رہے تھے. یہ جوڑی تیز رفتار سے آگے بڑھ رہی تھی لیکن محمد نبی نے ۴۲ کے مجموعی اسکور پر ونس کو اپنی ہی گیند پر کیچ کر کے اپنی ٹیم کو دوسری کامیابی دلائی.

نبی کا یہ اوور افغانستان کے لیے وردان ثابت ہوا. اس اوور کی تیسری گیند پر ونس کو چلتا کرنے کے بعد نبی نے چوتھی گیند پر کپتان ایون مورگن (۰) کو بولڈ کر دیا.

مورگن گئے اور ان کی جگہ لینے جوس بٹلر آئے لیکن اگلی ہی گیند پر روٹ اور بٹلر کے درمیان ایک رن چرانے کی کوشش میں غلط فہمی ہوئی اور نتیجہ ہوا کہ روٹ رن آؤٹ ہوکر پویلین لوٹ گئے.

روٹ کا وکٹ ۴۲ کے مجموعی اسکور پر گرا. اس طرح انگلینڈ نے اس اسکور پر تین وکٹ گنوا دیے.

اس کے بعد ۵۰ کے مجموعی اسکور پر بٹلر (۶) بھی چلتے بنے اور پھر ۵۷ کے مجموعی اسکور پر بین اسٹوکس (۷) کا وکٹ گرا.

جارڈن کا وکٹ ۸۵ کے مجموعی اسکور پر گرا. اس کے بعد معین اور ویلی نے کوئی نقصان نہیں ہونے دیا.

افغانستان کی جانب سے راشد خان اور محمد نبی نے دو دو وکٹ لیے. نبی نے چار اوور میں صرف ۱۷ رن خرچ کئے. سمیع اللہ شینواري اور امیر حمزہ کو بھی ایک ایک کامیابی ملی.

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *