سرجیکل اسٹرائیک کے سوال پر بی جے پی کا کیجریوال اور چدمبرم پر نشانہ

نئی دہلی(نامہ نگار): مرکزمیں برسراقتدار بی جے پی نے پاکستان مقبوضہ کشمیر میں ہندوستانی فوج کے ذریعہ کیے گئے سرجیکل اسٹرائیک پر سوال اٹھانے کے لیے عام آدمی پارٹی کے سربراہ اور دہلی کے وزیر اعلیٰ اروند کیجریوال کے ساتھ ہی کانگریس کے سینئر لیڈر پی چدمبرم کو بھی شدید تنقید کا نشانہ بنایا ہے۔ بی جے پی نے مذکورہ دونوں لیڈران کے بیان کو افسوسناک قرار دیا ہے۔ مرکزی وزیر مواصلات روی شنکر پرساد نے منگل کو میڈیا سے بات کرتے ہوئے کہا کہ اروند کیجریوال سیاسی اختلافات کی وجہ سے قومی سلامتی سے وابستہ اقدامات پر بھی سوال اٹھارہے ہیں جو نہایت ہی بدقسمتی کی بات ہے۔ انہوں نے کہا کہ اروند کیجریوال پاکستان کے ذریعہ پھیلائی جارہی افواہوں کی بنیاد پر وزیر اعظم نریندر مودی پر سوال اٹھارہے ہیں۔ روی شنکر پرساد نے اس کے ساتھ ہی کیجریوال سے اپیل کی کہ وہ ایسا کچھ نہ کریں اور نہ بولیں جس سے فوج کی حوصلہ شکنی ہو۔ بی جے پی لیڈر نے کیجریوال کے ساتھ ہی کانگریس کے سینئر رہنما اور سابق وزیر خزانہ پی چدمبرم کو بھی نشانہ بنایا ۔ انہوں نے کہا کہ پہلے دگ وجے سنگھ تھے جن کے بیانوں کو سنجیدگی سے نہیں لیا جاتا تھا، اب اس فہرست میں پی چدمبرم بھی شامل ہوگئے ہیں۔
دراصل دہلی کے وزیر اعلیٰ اور عام آدمی پارٹی کے کنوینر نے ایک ویڈیو پیغام کے ذریعہ جہاں سرجیکل اسٹرائیک کے لیے وزیر اعظم نریندر مودی کو سلام کیا ہے اور فوج کی تعریف کی ہے ، وہیں انہوں نے پاکستانی ایجنڈے کا پردہ فاش کرنے کے مقصدسے سرجیکل اسٹرائیک کے ثبوتوں کو عام کرنے کا بھی مطالبہ کیا ہے۔ کیجریوال کے اس موقف کا پاکستان اپنے حق میں استعمال کررہا ہے ۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *