کانگریس لیڈر پی چدمبرم گرفتار

نئی دہلی(نامہ نگار): آئی این ایکس میڈیا گھوٹالہ معاملے میں بدھ کورات قریب دس بجے سی بی آئی نے کانگریس لیڈر پی چدمبرم کو گرفتار کرلیا۔ ملک کے سابق وزیر داخلہ اور وزیر خزانہ پی چدمبرم پر غیرملکی ادارے سے آئی این ایکس میڈیا کمپنی میں سرمایہ کاری کے لیے رشوت لینے کا الزام ہے۔ پی چدمبرم نے گرفتاری سے تھوڑی دیر پہلے میڈیا سے بات کرتے ہوئے کہا تھا کہ وہ قانون سے بھاگے نہیں ہیں۔ انہوں نے کہا کہ زندگی اور آزادی میں وہ آزادی کو چنیں گے، کیونکہ آزادی کے لیے لڑنا پڑتا ہے۔ واضح ہوکہ سی بی آئی اور انفوسمنٹ ڈائریکٹوریٹ نے پی چدمبرم کے خلاف لک آؤٹ نوٹس جاری کیا تھا۔ یہ دونوں ایجنسیاں پی چدمبرم کو تلاش رہی تھیں۔پی چدمبر م میڈیا سے بات کرنے کے بعد اپنے گھر میں تھے کہ اسی دوران سی بی آئی ، ای ڈی اور دہلی پولیس کے اہلکار دیوار کود کر ان کے مکان کے احاطے میں داخل ہوئے اور انہیں گرفتار کرکے سی بی آئی کے ہیڈکوارٹر لے گئے۔ میڈیا اطلاع کے مطابق پی چدمبرم کو گرفتار کرکے جب سی بی آئی ہیڈکوارٹر لے جایا جا رہا تھا، اس دوران سی بی آئی کے ڈائریکٹر اپنے دفتر پہنچ چکے تھے۔
اس سے قبل منگل کو دیر رات کو سی بی آئی اور ای ڈی کی ٹیمیں پی چدمبرم کے گھر پہنچی تھیں لیکن وہاں سے سابق وزیر خزانہ غائب تھے۔ ان کے گھر پر سی بی آئی نے منگل کو رات میں ساڑھے گیارہ بجے نوٹس چسپاں کرکے انہیں دو گھنٹے کے اندر پیش ہونے کے لیے کہا تھا، لیکن وہ پیش نہیں ہوئے۔ انہوں نے دہلی ہائی کورٹ سے پیشگی ضمانت کی عرضی خارج ہونے کے بعد سپریم کورٹ میں عرضی داخل کی تھی لیکن منگل کو اس پر سماعت نہیں ہوسکی۔ سپریم کورٹ نے بدھ کو بھی انہیں کوئی راحت نہیں دی اور معاملے کی اگلی شنوائی کے لیے جمعہ کا دن مقرر کیا۔ البتہ اس سے پہلے ہی سی بی آئی نے بدھ کو دیر رات میں پی چدمبرم کو گرفتار کر لیا۔ پی چدمبرم نے کہا کہ جانچ ایجنسیوں کو جمعہ تک انتظار کرنا چاہیے تھا۔ اس دوران پی چدمبر کے بیٹے کارتی پی چدمبرم نے حکومت پر سیاسی انتقام کے جذبے سے کام کرنے کا الزام لگایا ہے۔ انہوں نے کہا ہے کہ ہمارے خلاف کوئی کیس نہیں ہے لیکن کسی افسر میں ہمت نہیں ہے کہ وہ کیس کی فائلوں کو بند کردے ۔ جانچ کا یہ لامتناہی سلسلہ ہراساں کرنے کا ایک ہتھیار ہے۔ تمل ناڈو کے شیوگنگا حلقہ سے رکن پارلیمنٹ کارتی پی چدمبرم نے کہا کہ جانچ ایجنسیوں کے افسران چند ایک افراد کو خوش کرنے کے لیے اس معاملے کو سنسنی خیز بنا رہے ہیں۔

Facebook Comments
Spread the love
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  

Leave a Reply