الیکشن کمیشن بے ایمانی کر رہا ہے: شرد یادو

ملک کے سامنے ایک بڑا بحران ہے، پیسے سے ووٹ خریدا جا رہا ہے، بیلٹ کی عزت کو بیٹی کی عزت کی طرح ہے، اس کو نہیں بیچیں، اس کی حفاظت کرنی چاہیے۔

پٹنہ:

راجیہ سبھا کے ممبر اور جنتادل متحدہ کے سابق صدر شرد یادو نے الیکشن کمیشن پر سنگین الزام لگاتے ہوئے کہا ہے کہ وہ ‘بے ایمانی’ کر رہا ہے۔ انہوں نے یہاں تاریخی کرشن میموریل ہال میں بہار کے سابق وزیر اعلی کرپوری ٹھاکر کے یوم پیدائش پر منعقد ایک تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہا: سیاسی پارٹیوں کے سامنے مالی وسائل نے ایک بحران کی صورت حال پیدا کردی ہے۔ جو سیاسی پارٹیاں اصول و نظریات کے حساب سے کام کرتی ہیں، ان کے لیے کام کرنا مشکل ہوگیا ہے۔ یہ ملک کے لیے سب سے بڑا مسئلہ ہے۔ ووٹوں کو خریدا جارہا ہے۔ لوگ بے ایمان بنائے جارہے ہیں۔ ایک بار ایمان بک گیا تو کچھ باقی نہیں بچے گا۔

شرد یادو نے کہا کہ وسائل کی طاقت سے الیکشن جیتنے کی کوشش کی جاتی ہے۔ ایسے میں غریبوں اور کمزوروں کے لیے جمہوریت اور ووٹ کی طاقت کا کچھ مطلب ہی نہیں رہ جائے گا۔ اس رجحان کو روکنا ہوگا۔ الیکشن کمیشن سیاسی پارٹیوں کا حساب کتاب ٹھیک ڈھنگ سے نہیں دیکھتا۔ جو پارٹیاں غلط طریقے سے پیسے جمع کرتی ہیں، ان کا تو کبھی کبھار ذکر ہوجاتا ہے، لیکن ان کا نام نہیں لیا جاتا جو اپنا حساب صاف ستھرا رکھتی ہیں۔ ہم اصول پر چلنے والے ہیں۔ جمہوریت کو بچانے اور اقتدار میں اپنی حصہ داری کے لیے اپنے ووٹوں کی حفاظت کرنا ضروری ہے۔ ریزرویشن سے مستقبل نہیں بنے گا۔  اس سے عزت ملتی ہے، وقار بڑھتا ہے اور حوصلہ ملتا ہے۔ مسقبل سنوارنے کے لیے اقتدار میں حصہ داری ضروری ہے۔ اس کے لیے اپنے ووٹ کی حفاظت کرنی ہوگی۔ اس کو کسی کے ہاتھ نہیں بیچیں۔ یہ جمہوریت کے لیے بہت خطرناک ہے۔ بیٹی کی عزت کی طرح بیلٹ کی بھی عزت کریں۔ بیٹی کی عزت جاتی ہے تو گھر، محلہ اور گاؤں کی بھی آبرو چلی جاتی ہے، اسی طرح ووٹ بک جائے، بیلٹ کی عزت چلی جائے تو ووٹر سے لے کر گاؤں، ریاست اور ملک تک کی آبرو چلی جاتی ہے۔ اس لیے اس کی حفاظت ہونی چاہیے۔ ملک کو بحران سے نکالنے کا یہی طریقہ ہے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *