ٹیکس کا نظام آسان بنایا جائے گا: وزیرخزانہ

وزیرخزانہ جناب ارون جیٹلی
وزیرخزانہ ارون جیٹلی

نئی دہلی، ۲۹ فروری، مرکزی وزیرخزانہ جناب ارون جیٹلی نے آج لوک سبھا میں عام بجٹ ۱۷-۲۰۱۶ پیش کرتے ہوئے کہا کہ حکومت ٹیکس نظام میں اصلاحات کمیٹی کی متعدد سفارشات کو پہلے ہی تسلیم کرچکی ہے۔انہوں نےکہاکہ بجٹ ۱۷-۲۰۱۶ میں جسٹس ایسورکمیٹی کی متعدد سفارشات کو قبول کرنے کی تجویز ہے۔مختلف ٹیکسوں کے نظام میں تخفیف لانے کے لیے اورٹیکس وصولی کی لاگت کو کم کرنے کے لیے مختلف وزارتوں کے ذریعے عائد کردہ ٹیکسوں میں سے۱۳ محصولوں کو کالعدم قراردینے کی تجویز ہے۔ اس طرح سے سال بھر میں ۵۰ کروڑ روپے سے بھی کم آمدنی کی وصولی ہوتی ہے۔آمدنی انکم ٹیکس کے لیے ذرائع پر ٹیکس کی کٹوتی(ٹی ڈی ایس) کے متعلق ضابطوں کو معقول بنانے کے لیے اقدامات کیے گئے ہیں تاکہ چھوٹے ٹیکس دہندگان کی رقم موجودہ ٹی ڈی ایس قوانین کی وجہ سے منجمد نہ ہوجائے۔

حکومت ہند نے درآمدات وبرآمدات کی تجارت میں لاگت کو کم کرنے کے لیے بھی اقدامات کیے ہیں۔ انہوں نے کسٹمزایکٹ میں بھی ترمیم کرنے کی تجویز پیش کی ہے۔اگلے مالی سال ۱۷-۲۰۱۶ سے بین الاقوامی مسافروں کے لیے کسٹمزضابطوں کومزید آسان بنایا جائے گا۔صرف ان سامانوں کے بارے میں انہیں بتانے کی ضرورت ہوگی جو ڈیوٹی والے ہیں۔ہندوستان میں کسٹمزسنگل ونڈو پروجیکٹ کو ملک کے تمام بڑے بندرگاہوں اور ہوائی اڈوں پرآئندہ مالی سال سے شروع کیا جائے گا۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *