حج پر سے جی ایس ٹی ختم کر نے کا مطالبہ.. محبوب علی قیصر نے وزیراعظم کو خط لکھ کر اپنی مانگ رکھی

نئی دہلی: مرکزی حج کمیٹی کے چیئرمین اور لوک جن شکتی پارٹی کے سینئر رہنما و ممبرپارلیمنٹ چودھری محبوب علی قیصر نے مرکزی حکومت پر ایک سنگین الزام لگاتے ہوئے مرکزی وزیر برائے اقلیتی امور مختار عباس نقوی کو کٹہرے میں کھڑا کردیا ہے۔ محبوب علی قیصر کا کہنا ہے کہ حج اس سال مہنگا ہوا ہے۔ حالانکہ مرکزی وزیر برائے اقلیتی امور مختار عباس نقوی مسلسل دعوی کررہے ہیں کہ اس سال حج سستا ہوگیا ہے۔

حکومت میں شامل ایل جے پی  کے رہنما نے سرکار کے قدآور وزیر کے فیصلے پر سوال اٹھایا ہے، اس سے دونوں لیڈرو ں کے درمیان اختلاف بڑھنا لازمی ہے۔ تاہم حج کمیٹی کے چیئرمین کا کہنا ہے کہ مجھے اس سے فرق نہیں پڑتا۔ سچائی کو جھوٹ نہیں کہا جاسکتا۔

دراصل محبوب علی قیصر نے وزیراعظم نریندر مودی کو خط لکھ کر عازمین حج پر لگائے گئے 18 فیصد جی ایس ٹی کو ختم کرنے کی اپیل کی ہے۔ انہوں نے اپنے خط میں یہ بھی لکھا ہے کہ اگر جی ایس ٹی لیاجانا بہت ضروری ہوتواسے 18 فیصد سے گھٹا کر 5 فیصد کردیاجائے۔

حج کمیٹی کے چیئرمین نےنیوز 18 اردو سے ٹیلیفونک بات چیت میں کہا کہ تمام چیزیں مہنگی ہوئی ہیں، اس لئے حج بھی مہنگا ہوا ہے۔ انہوں نے بتایا کہ 12 ہزار سے لے کر 59 ہزار تک حج مہنگا ہوا ہے۔ انہوں نے بتایا کہ ہاں ہوائی سفر کا کرایہ سستا ہوا ہے، لیکن مرکزی حکومت کی جانب سے 200 کروڑ کی سبسڈی ختم کئے جانے کے بعد سرکار کو جی ایس ٹی واپس لے لینا چاہئے۔ سرکار اگر جی ایس ٹی ختم کردیتی ہے تو کرایہ مزید سستا ہوجائے گا۔

حکومت میں شامل ہونے کے باوجود  حکومت کے دعوے پر سوال اٹھانے سے متعلق سوال کے جواب پر محبوب علی قیصر نے کہاکہ  میں حج کمیٹی کا چیئرمین ہوں، اس لئے میری ذمہ داری ہے کہ میں زیادہ سے زیادہ اور بہتر سے بہتر سہولیات عازمین کو فراہم کرسکوں۔  جو سچائی ہے، میں نے وہی کہا ہے۔

اب یہ دیکھنا ہوگا کہ حکومت اس پر کیافیصلہ کرتی ہے۔ محبوب علی قیصر نے کہا کہ میں حکومت یا وزیر کے خلاف نہیں ہوں، بلکہ میں اپنی ذمہ داری نبھا رہا ہوں۔ میں پہلے حج کمیٹی کا رکن نامزد کیا گیا اس کے بعد پھر حج کمیٹی کا چیئرمین منتخب کیا گیا، اس لئے میں اپنی ذمہ داری کو نبھانے کی کوشش کررہا ہوں۔

(بشکریہ نیوز 18 اردو)

Share

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *