NEET میں حفظ القرآن پلس کے طلبہ کی نمایاں کامیابی

بیدر، (محمدامین نواز بیدر):
ڈاکٹر عبدالقدیر سکریٹری شاہین ادارہ جارت بیدر نے عصری تعلیم سے نابلد حفاظ کے لیے ملک گیر  پیمانے پر شروع کیے  گئے ’’حفظ القُرآن پلس کورس‘‘ کے ذریعے ایک انقلاب برپا کر دیا ہے۔ عصری تعلیم سے نابلد حفاظ کرام کے لیے کل ہند سطح پر معروف پروگرام حفظ القُرآن پلس کے ذریعے 4 سال کے کم عرصہ میں بنیادی تعلیم اور جماعت دہم و پی یوسی میں عصری تعلیم کے ساتھ ساتھ NEET میں ۱۲ طلبہ نے امتیازی کامیابی حاصل کی ہے۔ اب وہ ایم بی بی ایس میں داخلہ لے سکیں گے۔
حفظ القرآن پلس کے طلباء و طالبات کی NEET میں آل انڈیا سطح پر حاصل کردہ رینک کی تفصیلات اس طرح ہیں: حافظ وحید عبداللہ 3295، حافظ قرۃ العین 7446، حافظ ثاقب احمد 63511، حافظہ امۃ اللہ فاتحہ 15270، حافظ فواز احمدخان 17681، حافظہ شوا فاطمہ خانم28443، حافظہ اُمۃ الودود 94871، حافظ ابوذر مجتہدی 106878، حافظ ولی الرحمن 127154، ابو لیث مجددی 137520، حافظ فاروق 266935 اور حافظ محمدعبداللہ سلیمانی 279912۔
کامیاب ہونے والے طلبہ و طالبات کو شاہین ادارہ جات بیدر کی جانب سے درخشاں مستقبل کے لیے دعا اور  دلی مبارکباد پیش کرتے ہوئے ڈاکٹر عبدالقدیر سکریٹری شاہین ادارہ جات بیدر نے کہا کہ الحمد للہ شاہین ادارہ جات بیدر میں حفظ القرآن پلس کے عصری تعلیم سے نابلد حفاظ کے چار بیچ کامیابی کے ساتھ مکمل ہوئے ہیں۔ ملک بھر کی کئی ریاستوں سے حفاظ شاہین ادارہ جات کی جانب سے شروع کیے گئے اس کورس کے ذریعے عصری تعلیم حاصل کر کے مختلف مسابقتی امتحانات میں کامیاب ہو رہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ طلبہ ڈاکٹر اور انجینئر ہی نہیں بلکہ دوسرے دوسرے پیشہ ورانہ کورسز میں داخلہ لے رہے ہیں۔
ڈاکٹر عبدالقدیر نے بتایا کہ حفظ القرآن پلس کورس کے ذریعہ حفاظ کرام کا امیج بدلنے کی ہماری اپنی سی کوشش ہے جس کے ذریعہ ہم چاہتے ہیں کہ ۵۰۰ سال قبل کا وہ دور لوٹ آئے جب علماء مختلف میدانوں میں قیادت کا فریضہ انجام دیتے تھے۔ وہ عصری تعلیم میں قیادت کا فریضہ انجام دیتے ہوئے بھی حافظ و عالم ہوتے۔ اکثر ریسرچ اسکالر س کا بھی یہی حال ہوتا۔ عموماًحفاظ طبقہ کو سلائی، کڑھائی، بڑھائی تک ہی رکھا جا رہا ہے جو ایک افسوسناک اور تشویشناک بات ہے اور ہمارے کانوں پر جوں تک نہیں رینگتی۔ انہوں نے بیدر کی آب و ہوا کے بارے میں بتایاکہ یہاں کی آب وہوا صحت کیلئے بہترہے۔ مختلف علاقوں اور مزاجوں کے لوگ 500 سال قبل سے ادھر آتے اور پانچ سو سالہ قدیم یونیورسٹی مدرسہ محمود گاواں میں تعلیم حاصل کرتے رہے ہیں۔ الحمد للہ آج شاہین ادارہ جات میں حفظ القُرآن پلس کور س کے حصول کے لیے ملک کی مُختلف ریاستوں سے حفاظ آ رہے ہیں۔ آج حفظ القُرآن پلس کے 32 مراکز پوری کامیابی کے ساتھ چل رہے ہیں۔ انہو ں نے بتایا کہ شاہین ادارہ جات بیدر میں عصری تعلیم سے نابلد حفاظ کے لیے علیحدہ طور پر جماعت دہم و پی یو سی کے لیے علیحدہ بیچ بنایا جارہا ہے جس میں 22؍ جون 2018ء سے داخلہ جاری ہیں۔
Share

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *