امارت شرعیہ کے صد سالہ تقریبات کے سلسلے میں سمری بختیار پور میں اجلاس عام کا انعقاد

وجیہ احمد تصور

سہرسہ: امارت شرعیہ ایک دینی، ملی، رفاہی اور شرعی تنظیم ہے جسکو ہمارے اکابر نے کتاب اللہ اور سنت رسول اللہ کی روشنی میں قائم کیا ہے. قرآن کریم میں ارشاد باری تعالٰی ہے کہ اے ایمان والو! تم بات مانو اللہ کی، تم بات مانو رسول اللہ کی اور بات مانو جو تم میں کا امیر ہو، تمہارا حاکم ہو. اسی فکر کو امارت شرعیہ کے بانیوں نے محسوس کیا اور جس کے نتیجے میں امارت شرعیہ قائم ہوئی اور آج دیکھا جائے تو امارت شرعیہ کتاب اللہ اور سنت رسول اللہ کی عملی تفسیر ہے.

  درج بالا خیالات کا اظہار امارت شرعیہ پھلواری شریف پٹنہ کے مفتی محمد سعید الرحمن قاسمی نے مہمان خصوصی کی حیثیت سے سمری بختیار پور میں دارالقضاء امارت شرعیہ کے سمری بختیار پور شاخ کے ذریعے امارت شرعیہ کے قیام کے صد سالہ تقریبات کے سلسلے میں منعقدہ اجلاس عام سے خطاب کرتے ہوئے کیا. مدرسہ قاسمیہ دارالقران کے احاطے میں منعقد اس اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے مفتی سعید الرحمٰن قاسمی نے کہا کہ امارت شرعیہ کا شعبہ دارالقضاء، دارالافتاء، شعبہ تعلیم اور شعبہ بیت المال ہے اور اللہ کا شکر ہے کہ سارے شعبے قرآن و سنت کی روشنی میں اپنی ذمہ داریوں کو بخوبی نبھا رہے ہیں. امیر شریعت و مفکر اسلام حضرت مولانا محمد ولی رحمانی صاحب کے حکم پر امارت شرعیہ کے پیغام اور خدمات کو گاؤں گاؤں تک پھیلا یا جا رہا ہے تاکہ امارت شرعیہ کے مقاصد کو مسلمان اچھی طرح  جان سکیں.
دارالقضاء سمری بختیار پور کے مفتی شاداب عالم قاسمی کی نظامت میں منعقد اس پروگرام کا آغاز قاری سید  منظرالحسن قاسمی کے تلاوت قرآن پاک اور جعفر امام قاسمی کے نعتیہ کلام سے ہوا. پروگرام میں شرکت کرنے والے اہم لوگوں میں مولانا مظاہرالحق قاسمی، مولانا محمد مشیر عالم، حافظ محمد ممتاز رحمانی، حافظ محمد فیروز عالم، محمد خالد، ماسٹر تنویر عالم، ماسٹر محمد یوسف، محمد راحیل انصاری، حافظ محمد رضوان عالم، وجیہ احمد تصور، محمد ہارون الرشید، مولانا محمد اعجاز، محمد افسر امام وغیرہ شامل تھے. آخر میں مولانا محمد مظاہرالحق صدر مدرس مدرسہ اشرفیہ تریانواں کے دعا پر مجلس اپنے اختتام کو پہنچی.
Share

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *