ملک خطرے میں ہے: تیجسوی یادو

سہرسہ ضلع کے سمری بختیار پور میں حزب اختلاف کے رہنما تیجسوی یادو کے جلسے کی رپورٹ

وجیہ احمد تصور

آج ملک کی کیا حالت ہے، کسانوں کی کیا حالت ہے، مزدوروں کی کیا حالت ہے، نوجوانوں کی کیا حالت ہے، بیوپاریوں کی کیا حالت ہے یہ کسی سے چھپی ہوئی نہیں ہے. ملک ہمارا آج خطرے میں ہے اور اس وقت   ایسی طاقت ملک پہ قابض ہے جو غریبی نہیں مٹا رہی ہے  بلکہ وہ غریبوں ہی کو مٹا دینا چاہتی ہے۔

 ان خیالات کا اظہار بہار اسمبلی کے حزب اختلاف کے لیڈر اور سابق نائب وزیر اعلی جناب تیجسوی یادو نے سمری بختیار پور کے ہائ اسکول میدان میں ایک بڑے عوامی جلسے سے خطاب کرتے ہوئے کیا.  انہوں نے کہا کہ جس کا ملک کی آزادی میں کوئی رول نہیں رہا وہ آج دیش بھکتی کا سرٹیفکیٹ بانٹ رہے ہیں. انہوں نے کہا کہ آج وہ بہار کا دورہ اسلئے کر رہے ہیں کہ آئین خطرے میں ہے.  ایک مرکزی وزیر کہتے ہیں کہ بابا صاحب کے آئین کو بدل دینگے تو موہن بھاگوت ریزرویشن ختم ۔کرنے کی بات کرتے ہیں.

تیجسوی یادو نے جذباتی ہوتے ہوئے کہا کہ لالو پرساد کا  قصور کیا ہے؟ یہی نا کی وہ غریب غربوں کی بات کر تے ہیں، غریبوں کو کھاٹ پر بیٹھا نے کا کام کیا، غریبوں کو سینے سے لگا نے کا کام کیا.. یہ غریب، مزدور اور اقلیتوں کے حقوق کو پامال کرنے والی سرکار ہے جس کو اکھاڑ پھینکنے کی ضرورت ہے.  تیجسوی یادو نے نتیش کمار کو نشانہ پر لیتے ہوئے کہا کہ وہ چاچا تو ہیں مگر گندے چاچا ہیں جنہوں نے عوامی جذبات کو مجروح کر اس پارٹی سے ہاتھ ملایا جس کے بارے میں کہتے تھے کہ مٹی میں مل جائیں گے مگر بی جے پی سے ہاتھ نہیں ملائیں گے ے.. پارٹی کے ضلع صدر ظفر عالم کی صدارت میں منعقد اس جلسے میں راجد کے قومی ترجمان منوج جھا، سابق وزیر اشوک کمار سنگھ، پروفیسر ڈاکٹر عبدالغفور، پروفیسر چندرشیکھر، ممبران اسمبلی ارون یادو، یدوونش یادو، اقلیتی سیل کے محمد مستقیم الدین، سابق ضلع صدر پروفیسر محمد طاہر، بلاک صدر سید ہلال اشرف، برکت علی سمیت بڑی تعداد میں پارٹی کے رہنما موجود تھے.

Share

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *