ہندوستان کی مہمان نوازی کا جواب نہیں: امریکی خاتون

نئی دہلی، ۲۴؍نومبر(نامہ نگار) : امریکہ سے آکر ہندوستان کی قومی راجدھانی دہلی کے ایک مسلم اکثریتی علاقہ ذاکر نگر میں انگریزی پڑھانے والی ہائیڈی لانگ کو یہاں کے لوگوں کی مہمان نوازی بہت اچھی لگتی ہے۔ نیوز ان خبرڈاٹ کام سے بات کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ انہیں ہندوستان کے لوگ بہت اچھے لگتے ہیں، اور خاص طور سے ان کی مہمان نوازی کا کوئی جواب نہیں۔


ہائیڈی لانگ کا کہنا ہے کہ انہیں یہاں کے طلبہ کو پڑھانے میں مزہ آتا ہے کیونکہ وہ بڑی محنت سے پڑھائی کرتے ہیں۔ محنت کرنے والوں کو اس کا پھل بھی ملتا ہے۔

اردو زبان سیکھنے اور بیشتر اوقات اسی میں بات کرنے کے حوالے سے پوچھے گئے سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ وہ ساڑھے چار سال پہلے یہاں آئیں ، اور مقامی لوگوں سے بات چیت کرنے کے لیے اپنے ایک دوست کی مدد سے اردو سیکھی۔ انہوں نے مزید کہا کہ سبھی زبانیں اچھی اور اہم ہیں، لیکن اردو ان کو بہت پسند ہے ،شاید اسی لیے اسے سیکھنے میں انہیں کوئی دقت نہیں ہوئی۔ ہائیڈی لانگ ہندوستان میں مقامی لوگوں سے بات چیت کرنے کے اپنے تجربے کے بارے میں بتائے کہتی ہیں کہ اگر کبھی کوئی بات سمجھنے یا سمجھانے میں پریشانی ہوتی ہے تو وہ انہیں حرکات و سکنات سے سمجھ لیتی ہیں یا مخاطب کو سمجھادیتی ہیں۔ ان کا کہنا ہے کہ یہ پریشانی کسی کے ساتھ بھی آسکتی ہے، اس لیے اس کا ان پر کوئی خاص اثر نہیں پڑتا۔

ہندوستان اور امریکہ کے درمیان عوامی سطح پر تعلقات کے حوالے سے انہوں نے کہا کہ دونوں ملکوں کے عوام جتنا زیادہ ایک دوسرے سے ملیں گے ، اتنا زیادہ تعلقات میں مضبوطی آئے گی۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *