یکجہتی کانفرنس میں جمعیۃ علماء ہند کے دو صدر!

نئی دہلی، ۱۲؍ مارچ، (نامہ نگار): ایک عرصے سے چچا بھتیجا کے درمیان جاری اختلاف کے سبب جمعیۃ علماء ہند کے بہی خواہوں نے گذشتہ دنوں اس وقت بڑی راحت کی سانس لی تھی جب ہندوستان کی اس اہم تنظیم کے کاموں کو ایک متحدہ پلیٹ فارم سے آگے بڑھانے کی بات سامنے آئی تھی۔ اس اتحاد کو قومی یکجہتی کانفرنس میں عملی صورت میں پیش کرنے کی بھی کوشش کی گئی۔ مولانا سید ارشد مدنی اور مولانا محمود مدنی کو ایک دوسرے کا ہاتھ تھامے ہوئے جلسہ گاہ کی طرف آتے دیکھ کر لوگوں کے چہروں پر خوشیاں کھیلنے لگی تھی۔ لیکن مولانا ارشد مدنی کی آواز پر جب مولانا محمود مدنی نے مائک سنبھالا اور مولانا ارشد مدنی کے ساتھ ہی قاری عثمان منصورپوری کا نام بھی بطور صدر جمعیۃ علماء ہند لیا تو اندرا گاندھی انڈور اسٹیڈیم میں موجود جم غفیر میں سے کئی چہرے ایک دوسرے کو سوالیہ نظروں سے دیکھتے ہوئے نظر آئے ۔ وہ ایک دوسرے سے صاف لفظوں میں تو نہیں پوچھ سکے مگر چہرے کا تاثر یہی بتا رہا تھا، جیسے جاننا چاہتے ہوں کہ بھائی ۔۔۔ ابھی ابھی جو اتحاد آیا تھا وہ کدھر گیا ہے؟

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *