جمعیۃ علماء ضلع سہرسہ کی انتخابی کارروائی مکمل’ ڈاکٹر معزالدین ضلع صدرمنتخب

وجیہ احمد تصور ✍️

سہرسہ….. جمعیۃ علماء ہند کی ضلعی کمیٹی سہرسہ کی انتخابی نسشت جمعیۃ کے ضلع صدر ڈاکٹر معز الدین کی صدارت میں منعقد کی گئی ۔قاری نوراللہ کی تلاوت سے مجلس کاآغاز ہوا۔جمعیۃ کے جنرل سکریٹری مولانا حبیب اللہ مظاہری نے جمعیۃ علماء کی مرکزی وصوبائی کمیٹی کی نمایاں خدمات کے ذکرکے ساتھ جمعیۃ کی ضلع کمیٹی کی کارکردگیوں کو نمایاں طورپر بیان کیا۔ اس کے بعد انتخابی کارروائی شروع ہوئی جس میں ڈاکٹرمعزالدین کو اتفاق رائے سے ایک مرتبہ پھر جمعیۃ کاضلع صدرمنتخب کیاگیا۔جب کہ مولاناحبیب اللہ مظاہری حسب سابق جنرل سکریٹری منتخب ہوئےاور نائب صدر کے عہدہ کے لیےحافظ ممتاز رحمانی (ضلع صدرصدرتنظیم ائمہ مساجد) مولاناطیب قاسمی’پروفیسرعبدالحنان سبحانی اورمولانایوسف کاانتخاب عمل میں آیاجب کہ مولانامحب اللہ’قاری نوراللہ نعمانی’ مفتی جعفرامام قاسمی اور محمدشبیرعالم نائب سکریٹری منتخب کیے گئے ‘خازن کا عہدہ حاجی الیاس بیگ کودیاگیا جب کہ ظفرعالم( ضلع صدر راشٹریہ جنتادل) اور حاجی عبدالرحیم کو جمعیۃ کامرکزی نمائندہ اور پروفیسرطاہر(سابق ضلع صدر راشٹریہ جنتادل)حاجی کرامت علی اورمطیع آفاق(ایڈوکیٹ)کو جمعیۃ کاصوبائی نمائندہ منتخب کیاگیا-اس موقع پر ضلع کے مختلف خطے سے درجنوں علماء ودانشوران نے شرکت کی اور مسلمانوں کے درمیان تعلیمی واخلاقی بیداری کو فروغ دینے کاحلف لیا۔اورنومنتخب صدرڈاکٹر معزالدین نے جمعیۃ کی حالیہ خدمات مثلابنگلہ دیش میں پناہ گزیں روہنگنیاں مسلمانوں کے لیے جمعیۃکی جانب سے تقریبا چارسو پختہ مکانات کی تعمیر اور سیمانچل کے سیلاب زدہ علاقے میں روزمرہ کی ضروری اشیاء کے علاوہ تقریبا دوسو مکانات کی تعمیر اوراس کے علاوہ جمعیۃ کی دیگر ملی ورفاہی خدمات پر تفصیل سے روشنی ڈالی۔ اوراخیر میں سیمانچل کی ادبی علمی روحانی اور سیاسی شخصیت مولانا اسرارالحق کے لیے دعائے مغفرت کی گئی۔اس انتخابی مجلس میں شرکت کرنے والوں میں مولاناسہراب ندوی’جاوید شیخ’ابوظفررحمانی’ڈاکٹراطہراقبال’رضی احمد’ڈاکٹرعبدالرحمن نور’مولانانہال’ڈاکٹرمنظورعالم’قاری روح اللہ’مفتی عبدالغنی’پروفیسرجمیل خان’مولاناعبدالحمید’مفتی عبدالمنان’وکیل نیرعالم’نعیم خان اورقیام الدین کانام قابل ذکرہے۔

Facebook Comments
Spread the love
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  

Leave a Reply