عمر، انربان کو ضمانت ملنے سے جشن میں ڈوبا جے این یو

20160318_163533

نئی دہلی۱۸؍مارچ (نامہ نگار) آج شام قریب چار بجے جیسے ہی عمر خالد اور انربھان بھٹاچاریہ کو ضمانت ملنے کی خبر جواہر لعل نہرو یونیورسٹی کیمپس پہنچی،بڑی تعداد میں طلبہ اور اساتذہ آزادی اسکوائر (انتظامیہ عمارت کا نیا نام) پر جمع ہوگئے اور ایک دوسرے کو مبارکباد پیش کی۔اس کے بعد دیکھتے ہی دیکھتے چاروں طرف آزادی اورانقلابی نعروں کی گونج سنائی دینے لگی۔جشن میں ڈوبی جے این یو برادری نے سماج مخالف ہرعنصر سے آزدی لینے کی بات کہی ۔انہوں نے وقت سے پہلے ہی خوب جم کر ہولی کھیلی اور ایک دوسرے کو گلال لگائے۔ یہاں سے سبھی طلبہ یونین صدرکنہیاکمار کی قیادت میں ایک جلوس کی شکل میں سابرمتی ڈھابہ پہنچے،جہاں ۹؍فروری کاواقعہ رونماہوتھا۔یہاں دیر شام تک نعرے بازی اور جشن کا ماحول رہا۔جے این یو برادری نے اپنے نعروں میں جہاں فرقہ پرستوں اور تشددپسندوں سے اپنی لڑائی جاری رکھنے کی بات کہی،وہیں آرایس ایس اور ذات پات کی روایت کو بھی خوب نشانہ بنایا۔ اس کے ساتھ ہی طلبہ نے جے این یو انتظامیہ کو بھی خبردار کیا۔
جے این یو ایس یو کی نائب صدر شہلارشید شوری نے اعلان کیا کہ آج رات ۹؍ بجے ایک متحدہ جلوس گنگاڈھابہ سے چندربھاگاہاسٹل تک نکالا جائے گا،عمر اورا نربھان کے کل رات میں کیمپس پہنچنے کی خبر ہے۔ واضح ہو کہ ۹؍ فروری کی شام میں عمر اور انربھان نے افضل گرو کی پھانسی کی برسی کے موقع پر ایک ثقافتی پروگرام بنام’’ پوسٹ آفس کے بغیر ایک ملک‘‘ کا انعقاد کیا تھا،جس کی وجہ سے ان دونوں کے علاوہ کنہیا کمارسمیت کئی طلبہ پر ملک سے غداری کا الزام لگایا گیاتھا۔ عمر اور انربان نے پولیس اسٹیشن جاکر خودسپردگی کی تھی۔ 20160318_165907

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *