جوگندر پال اردو فکشن کی دنیا کے بادشاہ تھے : چندربھان خیال

(جوگندر پال، تصویر: ایس سبرامنیم، بشکریہ ’دی ہندو‘)
(جوگندر پال، تصویر: ایس سبرامنیم، بشکریہ ’دی ہندو‘)

نئی دہلی، (پریس ریلیز) ممتاز افسانہ نگار و ادیب پروفیسر جوگندر پال کے انتقال پر اظہارِتعزیت کرتے ہوئے معروف شاعر، قومی اردو کونسل کے سابق وائس چیئرمین اور ساہتیہ اکادمی کے اردو ایڈوائزری بورڈ کے کنوینر چندربھان خیال نے کہا کہ اردو اب فکشن کی دنیا کے بادشاہ سے محروم ہوگئی ہے۔ یہ اردو زبان و ادب کا ایسا نقصان ہے جس کی تلافی ممکن نہیں۔ جوگندر پال اپنی زندگی میں ہی ایک لجنڈ کی حیثیت حاصل کرچکے تھے۔ اردو ادب کے ذریعہ انہوں نے انسان اور انسانیت کی شاندار خدمت کی ہے جسے کبھی بھی فراموش نہیں کیا جاسکے گا۔

چندربھان خیال نے اپنے بیان میں مزید کہا کہ جوگندر پال ان بزرگ ہستیوں میں تھے جنہوں نے اردو تہذیب کو ہمیشہ گلے سے لگائے رکھا اور تمام عمر اس گنگا جمنی مشترکہ تہذیب کی پاسداری کرتے رہے۔ فکشن نگاری کے میدان میں وہ عالمی سطح کی شہرت اور مقبولیت رکھتے تھے۔ وہ ترقی پسند تحریک سے وابستہ رہے اور ہمیشہ سماج کے دبے کچلے، مظلوم، کمزور اور حاشیے پر پڑے لوگوں کے مسائل اور دکھ درد کو اپنی تخلیقات کے ذریعہ سامنے لاتے رہے۔

جوگندر پال سے اپنے دیرینہ تعلقات کا ذکر کرتے ہوئے چندربھان خیال نے کہا کہ وہ نوجوان لکھنے والوں کی رہنمائی اور حوصلہ افزائی میں کبھی کوتاہی نہیں کرتے تھے۔ انہوں نے تمام عمر باصلاحیت نوجوانوں، ادیبوں، شاعروں اور افسانہ نگاروں کی ہر طرح سے مدد کی۔ وہ نوجوانوں کے مخلص دوست اور جوان فکر راہبر تھے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *