لاپتہ طالبعلم کا ڈیڑھ ماہ سے کوئی سراغ نہیں

مدھے پورہ، ۱۸؍نومبر(نامہ نگار)مدھے پورہ ضلع کے اوداکشن گنج تھانہ کے سنگار پور گاؤں میں گذشتہ کم وبیش ڈیڑھ ماہ سے جوبے چینی ہے وہ کم ہونے کا نام نہیں لے رہی ہے۔اس کی وجہ یہ ہے کہ اس گاؤں کے رہنے والے ۱۸؍سالہ محمد صابر علی کا اب تک کوئی سراغ نہیں مل سکاہے۔ وہ ۵؍اکتوبر سے لاپتہ ہے۔

md-sabir-aliاطلاع کے مطابق مونگیر ضلع میں واقع ایک مدرسہ میں زیر تعلیم محمد صابر علی بقرعید منانے کے لیے گھر آیا ہواتھا۔ چھٹیاں ختم ہونے کے بعد واپس مونگیر جانے کے لیے وہ گاؤں ہی میں۵؍ اکتوبر کو ایک بس پر سوار ہوا ۔ لیکن کئی دن گذرجانے کے بعد بھی صابر علی کی طرف سے گھر والوں کو جب کوئی فون نہیں آیا تو انہیں تشویش ہوئی۔ صابر کے والد محمد احمد اپنے فرزند کے بارے میں پتہ لگانے کے لیے اس مدرسہ تک پہنچ گئے جہاں ان کا بیٹا پڑھ رہا تھا۔ وہاں منتظمین نے انہیں بتایا کہ بقرعید کی چھٹی میں جو ان کا بیٹا گھر گیا تھا، اس کے بعد وہ واپس مدرسہ آیا ہی نہیں ہے۔

حیران و پریشان محمد احمد نے واپس آکر اودا کشن گنج تھانہ جا کر اپنے بیٹے کی گمشدگی کی رپورٹ درج کروائی۔ انہیں امید تھی کہ پولس ان کے فرزند کو تلاش کرنے میں مدد کرے گی، لیکن اب تک پولس صابر علی کا سراغ لگانے میں ناکام رہی ہے۔ صابرعلی کے والد کے مطابق جس دن ان کا بیٹا بس کے ذریعے مونگیر کے لیے روانہ ہواتھا، اس دن اسی گاؤں کا ایک لڑکا بھی اس بس پر سہرسہ گیا تھا۔ اس لڑکے نے بتایا کہ صابر سہرسہ کے مالی چوک پر بس سے اتر گیا تھا۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *