خسرہ کے ٹیکہ سے بچوں کو کوئی نقصان نہیں : ڈاکٹر

محمد امین نواز
بیدر:
ایسو سی ایشن آف مسلم ڈاکٹرس ضلع بیدر کی جانب سے منعقدہ ایک پریس کانفرنس میں محمد عبدالجبار ڈسٹرکٹ ہیلتھ آفیسر بیدر نے اردو صحافیوں کوبتایا کہ خسرہ اور روپیلا کے ٹیکہ سے بچوں کو ہرگز نقصان نہیں ہوگا۔ چند شر پسند افراد انجکشن کے تعلق سے وا ٹس ایپ اور فیس بک سے غلط افواہ پھیلا رہے ہیں، والدین اس طرح کی غلط باتوں پرتوجہ نہ دیں۔انہوں نے کہا کہ ٹیکہ کے کوئی ذیلی اثرات نہیں ہیں۔ یہ ٹیکہ اندازی مرکزی حکومت کی مہم کا حصہ ہے تاکہ 2020 تک روپیلا نامی خسرہ کا خاتمہ کیا جاسکے، اور اس سے بچوں کی صحت کو کوئی نقصان نہیں ہوگا۔ ٹیکہ اندازی سے متعلق غلط افواہوں سے بچوں کے والدین میں بیداری پیدا کرنے کے لیے محکمۂ صحت و خاندانی بہبود کے عہدیداران و عملہ مدارس کا دورہ کرکے اولیائے طلباء اور اساتذہ سے ملاقات کر رہے ہیں۔ پریس کانفرنس میں ایسو سی ایشن آف مسلم ڈاکٹرس ضلع بیدر کے صدر ڈاکٹر مقصود چند نے کہا کہ خسرہ اور روپیلا بیماریوں کی روک تھام کے لیے ٹیکہ کاری کی جاہی ہے۔ مرکزی حکومت کی اس مہم کے حوالے سے ریاست میں افواہیں پھیلائی جارہی ہیں کہ اس سے بچوں کو نقصان ہوگا، جو سراسر جھوٹ اور بے بنیاد ہے۔ انہوں نے کہا کہ اس سے لوگوں کو خوف زدہ ہونے کی ضرورت نہیں ہے۔ خسرہ کا ٹیکہ بچوں کے حفظان صحت کے لیے بہتر ہے ۔ ڈاکٹر مقصود چند نے افواہوں کو یکسر غلط بتاتے ہوئے کہا کہ یہ بات حقیقت سے کوسوں دور ہے اور جھوٹی ہے کہ انجکشن صرف مسلم بچوں کو دیا جارہا ہے۔ یہ انجکشن ہر طبقے کے بچوں کو دیا جارہا ہے۔ ڈسٹرکٹ ہیلتھ آفیسر ڈاکٹر محمد عبدالجبار کے علاوہ ایسو سی ایشن آف ملسم ڈاکٹر کے صدر ڈاکٹر مقصود چندا، سکریٹری ڈاکٹر نجیب فہمی عہدیداران میں ڈاکٹر حسام الدین عزیر‘ڈاکٹر عبدالباقی، ڈاکٹر شاہ ضیالاسلام، ڈاکٹرمحمدسہیل احمد، ڈاکٹر سالکہ کوثر، ڈاکٹر سمیہ سہیل، ڈاکٹر عبدالروف صدیقی ‘ڈاکٹر الطاف، ڈاکٹر مصطفی چندا موجود تھے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *