میڈیا آج بھی آزاد نہیں ہے: یوسف منا

?

نئی دہلی، ۱۳؍ فروری(نامہ نگار) معروف کارٹونسٹ یوسف منا کا کہنا ہے کہ کارٹون اظہاررائے کا اہم ذریعہ ہے۔ انہوں نے کہا کہ اس میدان میں روزگار کے امکانات بہت ہیں لیکن جو لوگ مخصوص نظریہ کے حامل ہیں، بازار کی ہوا کے مطابق اپنے آپ کو نہیں بدلتے، ان کے لیے آمدنی کا حصول تھوڑا مشکل کام ہوجاتا ہے۔ یوسف مانتے ہیں کہ اس صورت حال کی سب سے بڑی وجہ یہ ہے کہ میڈیا آج بھی آزاد نہیں ے۔

میڈیا کی پوری توجہ اپنے مالکان کے مفادات کے تحفظ پر ہوتی ہے، اسی لیے وہ کسی مخصوص نظریے کے بندھن میں بندھنے کی بجائے ہوا کی سمت کے ساتھ چلتی ہے، یعنی اس کے پیش نظر ہر لمحہ مالی اور سیاسی فائدہ رہتا ہے۔

یوسف منا کے کارٹونوں کی ایک جھلک

یوسف منا کم و بیش ۲۵؍ برسوں سے کارٹون بنا رہے ہیں، اورآج بھی کسی ایسے میڈیا کی تلاش میں ہیں جہاں انہیں پوری آزادی کے ساتھ کارٹون بنانے کا موقع مل سکے۔ نیوز ان خبر سے بات کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ سوشل میڈیا نے اظہاررائے کا اہم وسیلہ ضرور فراہم کیا ہے ، لیکن وہ بھی پوری طرح آزاد نہیں ہے۔ سوشل میڈیا چلانے والی کمپنیاں بھی ایسے لوگوں کو برداشت نہیں کرتیں، جو ان کمپنیوں یا ان کی پشت پناہی کرنے والے نظریوں کے شدید مخالف ہوتے ہیں۔ اس سب کے باوجود یوسف کارٹون کو روزگار کا اہم ذریعہ مانتے ہیں اور یہ کہتے ہیں کہ میڈیا میں خبروں اور تبصروں کے ساتھ ہی کارٹون کی بھی اپنی اہمیت ہے۔ یہ ایک ایسا شعبہ ہے جس میں خاص طور سے سماج کے ان طبقوں کے لوگوں کو آنا چاہیے جو اکثر میڈیا کے نشانے پر ہوتے ہیں۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *