مبارک پور میں ایک روزہ جلسہ اصلاح معاشرہ و نعتیہ مشاعرہ کا انعقاد

وجیہ احمد تصور ✍

سہرسہ….
مسلمانوں کے موجودہ تشویشناک حالات کے لئے تعلیمی پسماندگی اور آپسی اختلافات ذمہ دار ہیں. اگر ہم اپنے پرانے سنہرے دور میں لوٹنا چاہتے ہیں تو آپسی اختلافات کو پس پشت ڈال پوری طرح متحد ہو کر قوم میں تعلیمی بیداری لانی ہوگی. اندلس کا تاریخ دیکھئے جب ہزاروں سال تک حکومت کرنے والے مسلمان جب آپسی اختلافات کے شکار ہوئے اور نبی کے طریقے کو چھوڑا تو گاجر مولی کی طرح کاٹ کر برباد کر دئے گئے. اسلئے مسلمانوں کو تاریخ سے سبق لیکر مضبوط لائحہ عمل تیار کر تعلیمی پسماندگی کو دور کرنے کے لیے خصوصی توجہ دینے کی ضرورت ہے.
درج بالا خیالات کا اظہار مولانا سہیل احمد نعمانی اور حافظ نصراللہ نے سلکھوا بلاک کے مبارک پور میں منعقد ایک روزہ جلسہ اصلاح معاشرہ و نعتیہ مشاعرہ  میں عوام الناس کو خطاب کرتے ہوئے کیا.
نوجوان کمیٹی کے زیر اہتمام اس ایک روزہ جلسہ اور نعتیہ مشاعرہ کی صدارت مولانا ضیا الدین ندوی اور نظامت کے فرائض  حافظ عبالباسط نے انجام دیئے. اس موقع پر سلکھوا تھانہ میں تعینات پولیس جمعدار کریم الدین، حسیب جوہر، مہدی حسن، حفیظ اللہ، محمد فاروق، ابوسعد،  احمد حسین کے خوبصورت نعتیہ کلام سے پوری رات نکہت و نور کی بارش ہوتی رہی اور لوگ دلجمعی کے ساتھ واہ واہ اور سبحان اللہ کی صدائیں بلند کرتے رہے.
اس سے قبل اس پروگرام کا باضابطہ آغاز قاری منظر عالم اور قاری اسجد محمودی کے تلاوت قرآن پاک سے ہوا.  مولانا انظر علی  شمسی کے سرپرستی میں منعقدہ اس پروگرام کا اختتام مولانا شرف الدین رحمانی کے پرسوز دعاؤں پر ہوا.
Share

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *