قومی راجدھانی میں ہوگا مسلم خواتین کا دو روزہ کنونشن

(نئی دہلی میں پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے (دائیں سے) کملا بھسین،حسینہ خان اور ریشمہ، تصویر: اسفر فریدی)
(نئی دہلی میں پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے (دائیں سے) کملا بھسین،حسینہ خان اور ریشمہ، تصویر: اسفر فریدی)

نئی دہلی ، ۲۶؍ فروری (نامہ نگار): بیباک کلیکٹو کے زیر اہتمام ۲۷؍ اور ۲۸؍ فروری کو قومی راجدھانی میں واقع گاندھی اسمرتی اور گاندھی درشن میں مسلم خواتین کا دو روزہ کنونشن منعقد ہونے جارہا ہے۔ اس کی اطلاع دیتے ہوئے مذکورہ تنظیم کی روح رواں حسینہ خان نے ویمن پریس کلب میں منعقدہ ایک پریس کانفرنس کے دوران کہاکہ مسلم خواتین اپنے حقوق کی خاطر آواز اٹھانے کے لیے جمع ہورہی ہیں۔ انہوں نے کہا کہ ملک کی دوسری خواتین کی طرح ہی مسلم خواتین کے بھی کچھ اہم مسائل ہیں جن کی طرف حکومت اور سیاسی پارٹیوں کی توجہ مبذول کرانا بے حد ضروری ہے۔ حسینہ خان نے پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ مسلم خواتین کے اہم مسائل میں سماجی تحفظ ، مساوی شہری حقوق اور فرقہ وارانہ ماحول میں ان پر پڑنے والے منفی اثرات شامل ہیں۔ یہ وہ مسائل ہیں جو حکومت کی مداخلت سے ہی حل ہوسکتے ہیں اور انہیں حل کرنا حکومتوں کی ذمہ داری بھی ہے۔

’نیوز ان خبر‘ سے خصوصی بات چیت میں انہوں نے کہا کہ نئی دہلی میں جمع ہونے والی خواتین جہاں اپنے تجربات سے ایک دوسرے کو آگاہ کریں گی وہیں مختلف امور ومسائل پر سیاسی پارٹیوں کی توجہ مبذول کرانے کے لیے ان کے نمائندوں کے سامنے بھی یہ خواتین اپنی بات رکھیں گی۔ ’نیوز ان خبر‘ کے اس سوال پر کہ آخر وہ کس طرح حکومت کے سامنے اپنا مطالبہ پیش کریں گی ، حسینہ خان نے کہا کہ اس کے لیے مختلف طریقے اپنا ئے جارہے ہیں۔ ہم مختلف سطحوں پر حکومت سے بات کرنا چاہتے ہیں۔ مثال کے طور پر تین چار ہفتہ پہلے ہم نے وزیر خزانہ کو بجٹ کے حوالے سے کئی تجاویز پر مشتمل ایک مسودہ دیا ہے ۔ ہم نے اس کے ذریعہ انہیں یہ بتانے کی کوشش کی ہے کہ آنے والے بجٹ میں مسلم خواتین کے لیے کیا کیا چیزوں پر توجہ دی جانی چاہیے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *