اقلیتی محلے اندھیرے میں ڈوبے رہے

رضیہ خاتون
سہسرام:

بجلی جیسی بنیادی سہولتوں کی فراہمی میں کیسا کیسا کھیل کھیلا جا سکتا ہے، اس کا اندازہ یہاں اندھیرے میں ڈوبے چار محلوں کو دیکھ کر آسانی سے ہو جائے گا۔ بجلی نہیں آنے کی وجہ سے بدھ سے ہی اندھیرے میں ڈوبے رہنے والے سہسرام شہر کے یہ سبھی محلے اقلیتی فرقہ کی آبادی پر مشتمل ہیں۔ مقامی باشندوں کا کہنا ہے کہ انتظامیہ بجلی کی فراہمی میں بھی تعصب کرتی ہے۔ اس سلسلے میں مولانا مفیض الحسن کہتے ہیں کہ محکمہ توانائی کے ناکارہ پن کی وجہ سے ہی یہاں بجلی کی ایسی خراب رہتی ہے۔ انہوں نے کہا کہ جب محلے والے محکمہ توانائی سے شکایت کرتے ہیں تو وہ ٹکا سا جواب ملا کہ ٹرانسفارمر خراب ہے۔ یہ بات کچھ ایسے لب و لہجہ میں کی جاتی ہے جیسے جیسے محلے والوں نے ہی مل کر ٹرانسفارمر خراب کر دیا ہے اور اس کو ٹھیک کرنے کی ذمہ داری محکمہ توانائی کی نہیں ہے۔

مولانا مفیض الحسن

قابل ذکر ہے کہ یہاں کے بڑا شیخوپورہ، املی آدم خان، درگاہ دروازہ اور شیر گنج محلے میں بدھ کو صبح سویرے جو بجلی غائب ہوئی تو پھر رات تک نہیں آئی۔ مولانا مفیض الحسن کہتے ہیں کہ بجلی محکمہ اسی طرح ناکارہ پن دکھاتا رہا تو لوگوں کا جینا اور بھی زیادہ مشکل ہو جائے گا۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *