انٹرنیٹ سے اچھی کمائی کی جاسکتی ہے

نئی دہلی: انٹر نیٹ پر جتنی معلومات تلاش کی جاتی ہیں، ان میں سے ایک بہت ہی اہم اور زیادہ تلاش کیا جانے والا اس سوال کا جواب ہے کہ کیا انٹرنیٹ سے گھر بیٹھے کمائی کی جاسکتی ہے۔ اس کا جواب مثبت میں ہے۔ یعنی آپ گھربیٹھے انٹرنیٹ سے کمائی کر سکتے ہیں۔ لیکن انٹرنیٹ کوئی لاوارث پیڑ نہیں ہے کہ اس میں پیسہ لگاہوا ہے ، اور آپ گئے، اس کی ڈالی کو ہلایا ڈلایااور جھولا بھر پیسہ لے کر گھر چلے آئے۔ جی نہیں،انٹرنیٹ بھی دنیا کے اندر ایک دنیا ہے اور جس طرح دنیا میں آپ کو پیسے کمانے کے لیے محنت کرنی پڑتی ہے، اسی طرح انٹرنیٹ پربھی پیسے کمانے کے لیے آپ کو محنت کرنی پڑے گی۔
علامتی تصویر

انٹرنیٹ پیسہ کمانے کا ایک ذریعہ ہے۔ اگر یہ ذریعہ نہیں ہوتا تو ہم لوگ اپنی ویب سائٹ کھول کر اس پر محنت نہیں کررہے ہوتے۔ اب سوال یہ ہے کہ کیا انٹرنیٹ کے ذریعہ کمانے کے لیے پہلے سرمایہ کاری کرنی ہوگی، تو اس کا جواب بھی ہاں میں ہے۔ البتہ سرمایہ کاری کا مطلب صرف پیسہ لگانا نہیں ہے۔ گویاآپ انٹرنیٹ پر صرف اتنا پیسہ لگاکر اپنی کمائی شروع کرسکتے ہیں ، جتنے میں آپ ایک اسمارٹ فون لے سکیں اور اس میں انٹرنیٹ کنکشن کی سہولت حاصل کرسکیں۔ اگر وہ بھی نہیں ہے تو منظم طریقے سے آپ انٹرنیٹ کیفے کا بھی استعمال کرسکتے ہیں۔ اس میں آپ کو صرف اتنی ہی دیر انٹرنیٹ استعمال کریں گے، جتنی دیر اس کی آپ کو ضرورت ہوگی۔

البتہ انٹرنیٹ پرگھر بیٹھے کمائی کے لیے جس سرمایہ کاری کی سب سے زیادہ ضرورت ہے ، وہ ہے وقت اور اچھا مواد۔ اچھا مواد تیار کرنے کے لیے آپ کو وقت لگانا ہوگا۔ اس کے لیے آپ اکیلے اپنی راہ چل سکتے ہیں، لیکن ٹیم بنا کر کام کریں گے تو زیادہ فائدہ ہوگا۔ شروع میں یہ تو ضرور لگے گا کہ انٹرنیٹ سے کمائی الگ الگ ہاتھوں میں تقسیم ہوجائے گی ، لیکن یہ خیال درست نہیں ہے۔ ٹیم بنا کر کام کریں گے تو آپ اس کو پارٹ ٹائم سے فل ٹائم کرسکیں گے۔
کیسے ہوگی کمائی؟
انٹرنیٹ پر کمائی کے لیے دو راستہ ہے۔ ایک تو یہ کہ آپ اپنی دلچسپی یا پھر اپنے قارئین کی دلچسپی کے لیے تحریری مواد تیار کریں اور اس کو اپنی ویب سائٹ پر اپ لوڈ کریں ۔ اگر شروع میں آپ اپنی ویب سائٹ نہیں بنانا چاہتے ہیں تاکہ آپ کا کوئی پیسہ خرچ نہ ہو، تو اس کے لیے آپ گوگل کے بلاگ کا استعمال کرسکتے ہیں۔ وہاں اپنا اکاؤنٹ کھول لیں، اور پھر اپنی پوسٹ ڈالنا شروع کریں۔ اپنے بلاگ کو گوگل کے ایڈسنس سے جوڑنے کے لیے اپلائی کریں۔ جیسے ہی ایڈسنس کے لیے آپ کی درخواست منظور ہوگی، آپ کے بلاگ پر اشتہارات دکھائی دینا شروع ہوجائے گا۔ گویا آپ کی آمدنی کا سلسلہ اب شروع ہی ہونے والا ہے۔ لیکن یہ یاد رکھنا ضروری ہے کہ بلاگ پر صرف اشتہار کے دکھائی دینے سے پیسہ نہیں آئے گابلکہ جب اس کا استعمال ہوگا، یعنی لوگ مذکورہ اشتہار پر کلک کریں گے تبھی اس کی فیس کا ایک مخصوص حصہ آپ کو بھی ملے گا۔ لیکن جلدی سے کمائی کے شوق میں ایسا ہرگز نہیں کریں کہ خود ہی سے یا اپنے جاننے والوں سے اشتہار پر کلک کروانا شروع کردیں کیونکہ یہ چوری پلک جھپکتے ہی پکڑی جائے گی ، اور آپ کا بلاگ بغیر کسی تاخیر کے بلاک کردیاجائے گا۔ یعنی ساری محنت رائیگاں!
تحریری مواد کے علاوہ آپ ویڈیو بنا کر اس کو یوٹیوب پر ڈال سکتے ہیں۔ اس کے لیے یوٹیوب پر اپنا اکاؤنٹ کھولنا ہوگا۔ اس کے لیے بھی بلاگ کی طرح آپ کو جی میل اکاؤنٹ کی ضرورت ہوگی۔ یہاں بھی آپ کو ایڈسنس سے جوڑنے کے لیے اپیل کرنی ہوگی اور منظوری ملنے کے بعد آپ کے ویڈیو کے ساتھ اشتہار کا آنا شروع ہوجائے گا۔
لیکن آپ چاہے تحریری مواد تیار کریں ، یا پھر ویڈیو کی صورت میں اپنا کمال دکھائیں۔ دونوں میں کامیابی کا نسخہ ایک ہی ہے۔ یعنی جو بھی مواد ہو، وہ یا تو معلوماتی ہو یا پھر دلچسپی کا ہو۔ دوسری اہم بات یہ ہے کہ صبر کے ساتھ لگاتار محنت کرتے رہنے کی ضرورت ہے۔
ہم نے آپ کو بتایا تھا کہ انٹر نیٹ پر کمائی کے لیے ٹیم بنا کر کام کرنا ضروری ہے۔ اس کے بارے میں جاننے کے لیے ہمارے اگلے آرٹیکل کا انتظار کریں۔
Share

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *