اوپی شرما پر مناسب کارروائی کرے گی دہلی اسمبلی: رام نواس گوئل

عمیق جامعی پٹیالہ ہاؤس کورٹ میں اپنے اوپر حملے کو لے کر کجریوال اور نجیب جنگ سے بھی ملاقات کریں گے

Amiq Jamei with Delhi Assembly Speaker

نئی دہلی، ۸ اپریل (نامہ نگار): ۱۶ فروری کو پٹیالہ کورٹ حملہ معاملے میں بی جے پی ایم ایل اے او پی شرما کی مشکلیں بڑھنے والی ہیں۔ ابھی جہاں عام آدمی پارٹی کی ایم ایل اے الکا لامبا معاملے میں ایتھکس کمیٹی نے دو اجلاس کے لیے او پی شرما کو برخاست کیا ہے، وہیں عمیق جامعی پر حملے کے معاملے میں بھی ان کی مشکلیں بڑھنے والی ہیں۔

آل انڈیا تنظیم انصاف دہلی کے جنرل سکریٹری اور کمیونسٹ پارٹی آف انڈیا دہلی صوبہ کے مضبوط نوجوان لیڈر عمیق جامعی نے ایک وفد کے ساتھ آج دہلی اسمبلی کے اسپیکر رام نواس گوئل سے ملاقات کی۔ ملاقات کے دوران عمیق نے کہا کہ بی جے پی صدر او پی شرما نے ان پر پٹیالہ ہاؤس کورٹ میں اس وقت حملہ کیا، جب جے این یو اسٹوڈنٹ یونین کے صدر کنھیا کمار کی عدالت میں پیشی ہونے والی تھی۔ انھوں نے کہا کہ او پی شرما نے نہ صرف ان پر حملہ کیا، بلکہ انھیں جان سے مارنے کی دھمکی بھی دی۔ یہی نہیں، وہ قومی چینلوں پر قتل کے ارادوں کا اظہار کرتے ہوئے بھی پائے جا رہے ہیں۔ یہ بے حد افسوس ناک ہے کہ اسمبلی اور آئین میں یقین رکھنے والے ایک رکن کے ذریعہ یہ قابل مذمت فعل کیا گیا ہے۔

جامعی نے کہا کہ وہ چاہتے ہیں کہ دہلی اسمبلی او پی شرما پر ایوان میں کارروائی کرے اور دہلی حکومت ان کی حفاظت کا مناسب انتظام کرے۔

اس وفد سے بات کرتے ہوئے رام نواس گوئل نے کہا کہ پورے قانون و نظم کا مطالعہ کرنے کے بعد انھوں نے پایا کہ یہ معاملہ اسمبلی کے باہر کا ہے، لہٰذا وہ چاہتے ہیں کہ دہلی اسمبلی کا کوئی رکن اس معاملے میں اپنی شکایت درج کرائے، جس کے بعد ہی اسے ایتھکس کمیٹی کے سپرد کیا جائے گا۔

آل انڈیا تنظیم انصاف دہلی کے جنرل سکریٹری اور کمیونسٹ پارٹی آف انڈیا دہلی صوبہ کے نوجوان لیڈر عمیق جامعی اس معاملے میں دہلی کے لیفٹیننٹ گورنر نجیب جنگ اور وزیر اعلیٰ اروند کجریوال سے بھی ملاقات کرنے والے ہیں۔ غور طلب ہے کہ ۱۶ فروری کو عمیق جامعی پر حملے کے بعد دہلی پولس نے اس کی ایف آئی آر تو درج کی، لیکن مرکزی حکومت کے دباؤ کی وجہ سے پولس نے اس ایف آئی آر میں سے او پی شرما کا نام نکال دیا ہے۔

عمیق جامعی کے ساتھ اس وفد میں پی یو سی ایل کے وکیل امت شریواستو، دہلی تنظیم انصاف کے حارث الحق اور عبداللہ امتیاز بھی شامل تھے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *