دہلی میں مودی کےخلاف 14اپوزیشن پارٹیوں کےاحتجاجی ریلی میں بہار یوتھ راجدکےصدرقاری صہیب کی شرکت*

نئی دہلی،9/اکتوبر:(نمائندہ ) مودی سرکارکےخلاف تمام اپوزیشن پارٹیوں کےیوتھ لیڈران نےدہلی کےپارلیمنٹ اسٹریٹ پرایک عظیم الشان احتجاجی مظاہرہ اورریلی نکال کربےروزگاری،کریپشن،رافیل ڈیل،پٹرول وڈیژل کی قیمتوں میں دن بدن اضافہ اوربی جےپی حکومت کی ناکامی کےخلاف “یوناٹیڈیوتھ فرنٹ”کےبینرتلےزبردست احتجاج درج کیا،جن14اپوزیشن پارٹیوں کےیوتھ صدوراورلیڈران نےحصہ لیاان میں کانگریس،آرجےڈی،سی پی آئی،این سی پی،ایس پی،فاروڈبلاک،جنتادل سیکولر،آئی یوایم ایل،نینشل کانگریس،کیرالاکانگریس اورمسلم لیگ شامل ہیں_

اس احتجاجی مظاہرہ میں راجدیوتھ بہارکےریاستی صدرقاری صہیب بطورخاص شریک ہوےاوراپنی انقلابی تقریرمیں کہاکہ مودی سرکارہرمحاذپرناکام ہوچکی ہےاس لیےاس لیےاس بی جےپی کواب سرکارچلانےکاکوئی حق نہیں رہ گیاہے،جمہوریت خطرہ میں ہےتمام اپوزیشن پارٹیوں کایہ مشترکہ اسٹیج اس بات کاثبوت ہےکہ مودی کےجانےکاوقت آچکاہے،انہوں نےبی جےپی پرجم کرحملہ کرتے ہوتےکہاکہ بھاجپانفرت کی سیاست کرکےملک کوایک مرتبہ پہرتقسیم کرناچاہتی ہے،ہندومسلم اتحادکوختم کرکےاپنی سیاسی دکان چلانےکاخواب اب پورانہیں ہونےوالاہےکیوں کہ عوام مودی کی اس غلط اورملک دشمنی پالیسی کوسمجھ چکی ہے،قاری صہیب نے کہاکہ راشٹریہ جنتادل لالویادواورتیجسوی یادوجی کےقیادت میں سیکولراتحادکوبچانےمیں ہمیشہ آگےرہی ہےجب بہی نفرت کی سیاست کوہوادینےکی کوشش کی گئی ہماری پارٹی نےاس سوچ کوکچلنےکاکام کیاانہوں نےکہاکہ گجرات میں بہاراوریوپی کےبےگناہ لوگوں کوماراجارہاہےاوروزیراعظم خاموش تماشادیکھ رہےہیں،مودی نےجوبہی وعدےکئےسب جھوٹےنکلےاس لیےاس جھوٹےاورمکارشخص کواب کرسی پررہنےکاکوئی حق نہیں ہے،انہوں کہاکہ بی جےپی نفرت کی سیاست کواپناایجنڈہ بنالیاہےاورآرایس ایس کےاشارےپرسب کچھ کررہی ہے،ملک دشمن طاقتوں کواب عام آدمی ہرگزبرداشت نہیں کریں گے2019کےپارلیمانی الیکشن میں مودی کاوجودختم ہوجاےگا.

قاری صہیب نےکہاکہ نوجوان طبقہ اب بی جےپی کےبہکاوےمیں آنےوالی نہیں ہیں آج کایہ احتجاجی مظاہرہ پورےملک کےنوجوان کوبیدارکرنےکیلےایک سنگ میل ثابت ہوگا،پروگرام سےقبل دہلی میں موجود راجدکےسینکڑوں کارکنان نےقاری صہیب کی قیادت میں مودی سرکارکےخلاف جم کرنعرےبازی کی اوراپنےغم وغصہ کااظہارکیااوراپنی پارٹی کومزیدمضبوط بنانےکاعہدلیا_

Share

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *