کشمیر کے موضوع پرپاک ہائی کمشنر سے بات کریں گے میر واعظ

تصویر: بشکریہ گوگل
تصویر: بشکریہ گوگل

نئی دہلی، ۲۴ مارچ (نامہ نگار): دہلی میں واقع پاکستانی سفارت خانہ میں کل ’یومِ پاکستان‘ منایا گیا۔ اس تقریب میں مرکزی حکومت کی طرف سے وزیر ماحولیات پرکاش جاوڑیکر نے شرکت کی۔ حالانکہ پاکستانی سفارت خانہ نے وزیر اعظم کے دفتر (پی ایم او) کے وزیر مملکت جتیندر سنگھ کو بھی مدعو کیا تھا، لیکن انھوں نے اپنی پہلے سے طے شدہ مصروفیات کے سبب اس تقریب میں شرکت کرنے سے منع کر دیا تھا۔ پچھلے سال یومِ پاکستان کی تقریب میں شرکت کے بعد وزیر مملکت برائے امورِ خارجہ اور سابق آرمی چیف جنرل وی کے سنگھ کے اس بیان پر کافی ہنگامہ مچا تھا کہ وہ پاک ہائی کمیشن کے پروگرام میں شریک نہیں ہونا چاہتے تھے، لیکن وزیر اعظم نریندر مودی کے کہنے پر انھیں اس تقریب میں شریک ہونے پر مجبور ہونا پڑا۔

یومِ پاکستان کی اس تقریب میں ہر سال کی طرح پاک ہائی کمیشن نے جموں و کشمیر کے حریت لیڈروں کو بھی دعوت دی تھی۔ قابل ذکر ہے کہ پاکستانی سفارت خانہ میں بزرگ علاحدگی پسند لیڈر سید علی شاہ گیلانی کو ’اسٹیٹ گیسٹ‘ (ریاستی مہمان) کا درجہ دیا جاتا ہے اور اسی کے حساب سے ان کی تواضع کی جاتی ہے۔

حریت کانفرنس کے چیئرمین میر واعظ عمر فاروق نے بھی کل کے پروگرام میں شرکت کی اور آج انھوں نے میڈیا کو بتایا کہ وہ پاک ہائی کمشنر عبدالباسط سے ملاقات کرنے جا رہے ہیں، جہاں وہ یہ جاننے کی کوشش کریں گے کہ ہندوستان اور پاکستان اپنے مذاکرات میں کشمیر کے لیے اعتماد بحالی سے متعلق کوئی قدم اٹھانے جا رہے ہیں یا نہیں۔ انھوں نے نامہ نگاروں کو بتایا کہ انھیں اس بات کی خوشی ہے کہ ہندوستان اور پاکستان نے مذاکرات کا سلسلہ شروع کر دیا ہے۔ اس سلسلے میں انھوں نے گزشتہ دنوں نیپال میں سشما سوراج اور سرتاج عزیز کی ملاقات کو ایک اچھی پہل قرار دیا۔

عمر فاروق نے نامہ نگاروں کو بتایا کہ ’’میں پاکستان کے ہائی کمشنر سے ملنے جا رہا ہوں۔ میں ان سے یہ پوچھنے کی کوشش کروں گا کہ کیا ہندوستان اور پاکستان کے درمیان کشمیر کے معاملے پر الگ سے کوئی بات ہوگی یا نہیں اور اس میں اعتماد بحالی کے اقدام کا کوئی ذکر ہوگا یا نہیں۔ ساتھ میں ایفسپا کو ہٹانے پر کیا کچھ کیا جا رہا ہے، یہ بھی جاننے کی کوشش کروں گا۔ کل ملاکر میں یہ جاننے کی کوشش کروں گا کہ دونوں ملکوں نے اپنی بات چیت میں کشمیر سے متعلق مسائل کو شامل کیا ہے یا نہیں۔‘‘

پاک ہائی کمشنر عبدالباسط نے کل کہا تھا کہ ’برابری کی بنیاد پر‘ ہندوستان اور پاکستان کے درمیان بات چیت رشتوں کو بہتر کرنے میں مددگار ثابت ہوگی اور اس کے لیے جموں و کشمیر کے مسئلہ کو حل کرنا بھی ایک اہم ایشو ہے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *