قوموں کی ترقی کا دارو مدار ان کی تعلیم پر منحصر ہے: مولانا عمری

14520484_1070977163019397_6054037353388452843_n
نئی دہلی۔ اسٹوڈنٹس اسلامک آرگنائزیشن آف انڈیاکی جانب سے انڈیا اسلامک کلچرل سینٹر، نئی دہلی میں دو روزہ بین الاقوامی کانفرنس کا انعقاد ہوا، جس میں عالم اسلام کے مشہور و معروف محققین اور اسکالرز نے شرکت فرمائی۔ مولانا سید جلال لدین عمری ، امیر جماعت اسلامی ہند نے پروگرام کی صدارت فرمائی۔ آپ نے بتایا کہ ہمیں اس بات کی بہت خوشی ہے کہ ہمارے ملک کی سب سے بڑی اسلامی طلبہ تنظیم نے علم کی طرف خاص توجہ دی اور اس کانفرس کو منعقد کیا اور اس کے لیے قدیم و جدید موضوعات کا انتخاب کیا۔ ان شاء اللہ اس کانفرنس میں جو علمی بحث ہوگی اس سے امت کو بہت فائدہ ہوگا اور تحقیق کے لیے نئے موضوعات سامنے آئیں گے۔ مولانا عمری نے مزید فرمایا کہ یہ اس دنیا کا قانون ہے کہ جو قوم بھی علم کے میدان میں آگے ہوتی ہے وہ نہ صرف یہ کہ ترقی کرتی ہے بلکہ دنیا کی امامت بھی کرتی ہے۔
پروگرام کے آغاز میں سکریٹری ایس آئی او آف انڈیا جناب لئیق احمد خان نے مختصراً کانفرنس کے اغراض و مقاصد پر روشنی ڈالی۔ انھوں نے بتایا کہ تعلیمی میدان میں اسلام کی جو وا ضح اور روشن قدریں ہیں انھیں پروان چڑھانے اور ان میں تحریک پیدا کرنے کی غرض سے ایس آئی او آف انڈیا نے بین الاقوامی اسلامک اکیڈمک کانفرنس کے انعقاد کا فیصلہ کیا ہے، جس کے پیش نظر تین امور کی طرف امت مسلمہ کی توجہ مرکوز کرانا ہے:(۱) علم کلام (۲) مختلف تشخصات :قومی ریاست ، سول سوسائٹی اور اسلام(۳) تہذیبی مباحثے: مقاصد شریعت کی روشنی میں۔
پروگرام میں عالم اسلام کی مختلف معروف و مشہور شخصیات نے شرکت فرمائی، جس میں مولانا سید جلال لدین عمری، امیر جماعت اسلامی ہند، مولانا سید سلمان حسینی ندوی، ڈین فیکلٹی آف شریعہ ندوۃ العلماء لکھنؤ، جناب اقبال حسین صاحب، صدر تنظیم ایس آئی او آف انڈیا، جناب الف شکور صاحب، جنرل سکریٹری ایس آئی اوآف انڈیا، معروف اسلامی اسکالر جناب ڈاکٹر ظفر الاسلام خان صاحب، پروفیسر محسن عثمانی ندوی صاحب، مولانا امین عثمانی ندوی صاحب، سکریٹری اسلامک فقہ اکیڈمی، جنا ب نصرت علی صاحب، نائب امیر جماعت اسلامی ہند، جناب ٹی عارف علی صاحب ، نائب امیر جماعت اسلامی ہند ، ڈاکٹر محمد رفعت صاحب، پروفیسر جامعہ ملیہ اسلامیہ، ڈاکٹر محمد رضی الاسلام ندوی صاحب، مدیر معاون سہ ماہی ’تحقیقات اسلامی‘ قابل ذکر ہیں۔
مولانا سلمان حسینی ندوی صاحب نے نوجوان اسلام کو سیرت النبی اور سیرت صحابہ کو اپنانے کی طرف توجہ دلائی اور کہا کہ نوجوانان اسلام کو چاہیے کہ وہ اسلام کو اپنا اوڑھنا اور بچھونا بنالیں اور پھر یہ عزم لے کر اٹھیں کہ ہندوستان میں رہنے اور بسنے والے ہر انسان کو پیغام الٰہی سے روشناس کرائیں۔
پروفیسر ظفر الاسلام خان صاحب نے نے اپنے جذبات و احساسات کا تذکرہ کرتے ہوئے کہا کہ ہمارے ملک کی سب سے بڑی اسلامی طلبہ تنظیم ایس آئی او مبارک باد کی مستحق ہے ،اس نے تعلیم سے آگے بڑھ کر تحقیق کی طرف رہنمائی کی جانب پیش قدمی کی ہے۔
انجینئر محمد سلیم صاحب نے بتایا کہ دنیا میں ملتوں اور قوموں کی ترقی کی پہچان اس بات سے ہے کہ وہ ریسرچ اور تحقیق کی میدان میں کتنی ترقی کر رہی ہیں۔
اقبال حسین صاحب ،صدر تنظیم ایس آئی او آف انڈیا نے بتایا کہ اسلام ایک آفاقی مذہب ہے ، یہ صرف مسلمانوں اور ملت اسلامیہ سے بحث نہیں کرتا، بلکہ وہ پوری انسانیت سے بحث کرتا ہے۔ اسلام ہی دنیا میں وہ واحد مذہب ہے جس میں حقیقت میں ساری انسانیت کی
فلاح و کامرانی ہے۔

 

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *