اس ملک پرپہلاآتنکی حملہ گوڈسے نے کیاجسے بی جے پی والے اپناقائد مانتے ہیں۔اخترالایمان

مجلس کے ریاستی صدر اختر الایمان دھرنا سے خطاب کرتے ہوئے

اس ملک پرپہلاآتنکی حملہ گوڈسے نے کیاجسے بی جے پی والے اپناقائد مانتے ہیں۔اخترالایمان
سمری بختیارپوررانی باغ دھرناکے پچیسویں دن کئی اہم شخصیات نے شرکت کی
سمری بختیارپور(جعفرامام قاسمی)اس ملک کی آزادی میں سب سے زیادہ حصہ داری غریبوں کی تھی۔یہی وجہ تھی کہ مہاتماگاندھی غریبوں سے حددرجہ محبت کرتے تھے۔آج آسام کے اندر این آرسی کے بہانے 19لاکھ لوگوں کوجن میں اکثریت غریبوں کی ہے اوراتفاق یہ کہ ان میں فقط پانچ لاکھ مسلمان ہیں اورباقی چودہ لاکھ ہندوشامل ہیں انہیں ناموں کی تھوڑی تھوڑی غلطیوں کی وجہ قیدزنداں کردیاگیا۔یہ غریبوں کے ساتھ کھلی دشمنی ہے اوریہ انسانیت کے بھی خلاف ہے۔ان خیالات کااظہارکشن گنج کے سابق ایم ایل اے اورآل انڈیااتحادالمسلمین کے صوبائی صدر جناب اختر الایمان نے سمری بختیارپور کے رانی باغ دھرناسے خطاب کرتے ہوئے کہی۔انہوں نے اپنے خطاب میں کہاکہ ڈاکٹربھیم راوامبیڈکرکی سرکردگی میں ہمارے ملک کاجوآئین بنااس میں ہرانسان کواپنے مذہب ،اپنی تہذیب اوراپنی طریقہ زندگی کوعمل میں لانے کے لیے اوراس کے مطابق اپنی زندگی ڈھالنے کامکمل حق دیاگیا۔اورآج تک ہندوستان کی کسی حکومت نے اس پرشبخون نہیں مارالیکن اس سترسال میں پہلی بارگوڈسے کی اولادنے اپنے اس خواب کوپوراکرنے کی ٹھانی جوخواب آرایس ایس نے اپنے روزاول سے سجارکھاتھا۔انہوں نے کہاکہ آرایس ایس کی بنیادہی اس لیے ڈالی گئی تھی کہ ہندوستان میں صرف ہندوبسیں گے۔دوسرے مذاہب والوں کے لیے اس میں کوئی گنجائش نہیں ہے ۔انہیں نکال باہرکیاجائے گا۔اوردوسراخواب یہ تھاکہ جودلت اورپچھڑی ذاتی کے لوگ ہیں انہیں چوتھے درجے کاشہری ماناجائے گاجنہیں نہ ووٹ دینے کااختیارہوگا اورنہ انہیں سرکاری نوکریاں دی جائیں گی بلکہ فقط وہ لوگ ہم بڑی ذاتی کے لوگوں کی غلامی کرتے رہیں گے۔انہوں نے کہاکہ انہی دونوں خوابوں کوپوراکرنے کے لیے این آرسی کرانے کی بات یہ حکومت کررہی ہے۔انہوں نے کہاکہ سب سے پہلے ان لوگوں نے آسام میں این آرسی کرایاتوالٹے خودپھنس گئے چودہ لاکھ ہندوہی اس کی زدمیں آگئے توان کی ناراضگی دورکرنے اورانہیں اطمینان دلانے کے لیے امیت شاہ نے کلکتہ میں اعلان کیاکہ مسلمانوں کوچھوڑکرکسی مذہب کے لوگوں کوگھبرانے کی ضرورت نہیں ہے۔ہم۔ان کے لیے سی اے اے لائیں جس کے ذریعے مسلم۔چھوڑکرسبھی مذاہب کوشہریت مل جائے گی۔لیکن میں کہتاہوں یہ دھوکہ ہے ،نوٹ بندی کے موقع پراسی طرح کالادھن واپس لانے کی بات کہ کرسب کوبے وقوف بناڈالااب دلت اورپچھڑی ذاتی کے لوگوں کوبے وقوف بنارہے ہیں ۔

آرایس ایس کی جوپلاننگ ہے اسے یہ لوگ عملی جامہ پہنانے کی مکمل تیاری کرلی ہے کہ مسلمانوں کوملک سے باہرکرنااوردلتوں کوغلام۔بناکررکھنا۔انہوں نے کہاکہ مسلمان بزدل قوم نہیں اورنہ ہمارے دلت بھائی یہ نہ ان سے ڈریں گے اورنہ ان کے بہکاوے میں آئیں گے۔اب اس حکومت سے آزادی کامطالبہ لے کر ہماری مائیں اوربہنیں بھی میدان میں اپنے آنچل کوترنگابناکرنکل چکی ہیں ۔یہ جنگ ہم لوگ جیت کررہیں گے۔وہیں ایم آئی ایم کے کشن گنج کے ضلع صدراظہارآصفی نے کہاکہ ہم لوگ اب تک غفلت کی نیند سورہے تھے۔اسی غفلت کافائدہ اٹھاکر اس حکومت نے ہمارے ملک کے آئین اورہماری مذہبی آزادی پرحملہ کیاہے ۔اب ہم۔لوگ بیدارہوچکے ہیں اس لیے اس حملے کاہم۔لوگ بھرپورجواب دیں گے۔

مجلس کے یوتھ کے صوبائی صدرعادل امام آزادنے کہاکہ جس ملک کے وزیراعظم کی سیکوریٹی پرایک دن میں ایک کروڑ باسٹھ لاکھ روپے خرچ ہوتے ہوں اوردوسری طرف اس ملک میں بے روزگاری،غریبی،بیماروں کوہسپتالوں میں دوائیاں نہ ملتی ہوں ایسے ملک کاکیاحشرہوگاخداہی جانتاہے۔ایم آئی ایم کے پورنیہ ضلع صدرراشداقبال نے کہاکہ ابھی ابھی دھلی کے باشعورعوام نے اس فرقہ پرست حکومت کی ہٹلرپنی دورکی ہے۔اگراب بھی اپنی ضدسے یہ بازنہیں آئی توآئندہ دوسری ریاستوں میں بھی اس کانام ونشان باقی نہیں رہے گا۔

آج کے دھرناکی نظامت پن پن یادواورشہنوازبدرقاسمی نے مشترکہ طورپرانجام دیا۔واضح رہے کہ سی اے اے ،این پی آراوراین آرسی کے خلاف شاہین باغ کے طرزپر سنودھان بچاوسنگھرش سمیتی کے زیراہتمام چل رہے غیرمعینہ دھرناکے آج پچیسویں دن دھرناگاہ کاکونہ کونہ مظاہرین سے پرنظرآرہاتھا۔جن میں بڑی تعدادغیرمسلم عورتوں اورمردوں کی بھی تھی۔آج کے دھرنامیں سیدہلال اشرف،پروفیسرنعمان،ابوالفرح
شاذلی،حافظ سعدالدین،حافظ ممتازرحمانی،چھتری یادو،چاندمنظرامام،منورعالم،عقیل عالم عرف چاندبابو،وجیہ احمد تصور ،مفتی فیاض عالم قاسمی،لطف الرحمن قاسمی،جاویداخترعرف گڈو،مدثرعالم،عبدالسلام امین،  وغیرہ موجودتھے۔

Facebook Comments
Spread the love
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  

Leave a Reply