بھگوا مہم کا دیو ہر ہندوستانی کو نگل رہا ہے

وزیراعظم مودی کا بے مغز فیصلہ کھلی ملک دشمنی: نازیہ الہیٰ خان 
کولکاتا (پریس ریلیز)
اس استدلال کے ساتھ کہ دنیا کی باطل قوتیں اگر کسی سے خوف کھاتی ہیںتو وہ ہے اسلام اور مسلمانوں کا اتحاد و اتفاق فورم فارآرٹی آئی ایکٹ اینڈ انٹی کرپشن کی سربراہ ایڈوکیٹ نازیہ الہیٰ خان نے کہا کہ مسلمانوں کو متحد ہوکرکولکاتا کے پارک سرکس میدان میں آئندہ 20نومبر اتوار کی دوپہر ہونے والے آل انڈیامسلم پرسنل لا بورڈ کے اجلاس عام میں شریک ہوناچاہئے اور یہ بتادینا چاہئے کہ شریعت اور قانون الٰہیہ کے تحفظ کیلئے ہم متحد ہیں ۔
 محترمہ خان یہاں شمالی چوبیس پرگنہ کے ٹاکی میں منعقد ایک جلسہ سے خطاب کررہی تھیں۔ ’ کھولا پوتا سوکل شرمک ‘ نامی ادارہ کے زیرا ہتمام ہوئے اس جلسہ میں علاقہ کے معززین اور خواتین کا ایک زبردست ہجوم موجود تھا۔
ایڈوکیٹ خان نے کہا کہ مرکزی حکومت پر قابض آر ایس ایس کے بغل بچہ بی جے پی کے بے دماغ حکمرانوں کے لتے لیتے ہوئے کہا کہ ہوس اقتدار اور مسلم دشمن میں یہ طبقہ اس حد تک آگے بڑھ گیا ہے کہ صرف مسلمانوں کو ہی نہیں پورے ہندستان کے عوام کو مجرم ٹھہرارہاہے ۔ محترمہ خان نے کہا کہ 500اورہزار روپئے کی مالیت کے کرنسی نوٹوں کی لین دین بند کرنے کے بے مغز فیصلے کے فوراً بعد جاپان سدھارنے والے وزیراعظم غیروں کی سرزمین پر یہ کہہ رہے ہیں ہندستان کے عوام کے پاس کالا دھن ہے اور اس کے خلاف کارروائی کررہے ہیں ۔ یہ کہہ کر انہوں نے پورے ملک کو مجرم ٹھہرا دیا۔
محترمہ نے کہا کہ یکساں سول کوڈ کا شوشہ چھوڑ کر ایک جانب مسلمانوں کو دکھ دینے اور ان کے خلاف برادران وطن کو لام بند کرنے کی کوشش کی گئی تو دوسری طرف نوٹ بندی کا بم پھوڑ کر پورے ملک کو بدعنوان ٹھہرادیاگیا اور ملک کے ہر عام شہری کو عملاً بھکاری بنادیاگیا اپنی ہی گاڑھی کمائی کوحاصل کرنے کیلئے قطار میں کھڑے بزرگ ضعیف خواتین اور مرد اپنی عزت نفس کا جنازہ نکلتے دیکھ رہے ہیں۔ اپنے ہی ملک کے اس عوام کو جس کے ٹیکس کے پیسے سے آج وزیراعظم مودی عیش کررہے ہیں روزانہ تین تین سوٹ بدلتے ہیں ‘ ہر دوسرے دن بیرون ملک کا سفر کرتے ہیں اور عیش و آرام میں نمرود و شداد کو پیچھے چھوڑنے کا ریکارڈ بنارہے ہیں اسی عوام کو مجرم ٹھہرانے‘ ان پرظلم کرناان کی فسطائی ذہنیت کا کھلا ثبوت ہے۔
ایڈوکیٹ نازیہ الہیٰ خان نے کہا کہ مسلمان اپنے پاس موجود پائی پائی کا حساب دے سکتا ہے کیوں کہ وہ اپنی دولت پر زکوٰة نکالتا ہے دوسروں سے ایک ٹیکس زیادہ ادا کرتا ہے اب بھی وقت ہے وزیراعظم ہوش کے ناخن لیں اور اس طرح کے بے مغز فیصلوں سے عوام کا صبر نہ آزمائیں ۔مسلمانوںکے خلاف شروع کی گئی بی جے پی اور آرایس ایس کی مہم کادائرہ اپنے ہی ملک کے عام شہریوں تک پھیل گیا ہے واقعی ہندوستان بدل رہا ہے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *