ایس ڈی پی آئی نے نوٹ بندی کے خلاف مظاہرہ کیا

کیرل، آندھرا پردیش اور راجستھان میں سڑکوں پر اترے مظاہرین، وزیر اعظم نریندر مودی کا پتلا پھونکا
نئی دہلی( پریس ریلیز) :
سوشل ڈیموکریٹک پارٹی آف انڈیا (ایس ڈی پی آئی) کے کارکنان اور عوام نے مرکزی حکومت کے نوٹ بندی کے خلاف کیرل، آندھراپردیش اور راجستھان میں احتجاجی مظاہروں کا انعقاد کیا۔ ان احتجاجی مظاہروں کے دوران پارٹی کارکنوں اور عوام نے وزیر اعظم نریندر مودی کا پتلا بھی جلایا۔ راجستھان کے کوٹہ میں ایروڈرم سرکل میں ایس ڈی پی آئی نے احتجاجی مظاہرے کے بعد ضلع کلکٹریٹ پہنچ کرایڈیشنل کلکٹر کے توسط سے صدر جمہوریۂ ہند کے نام میمورینڈم پیش کیا۔ ایس ڈی پی آئی نے کہا ہے کہ مرکزی حکومت نے بغیر کسی مناسب تیاری کے نوٹ بندی کااعلان کیا ہے، جس سے ملک کے عوام شدید پریشانی اور تکالیف میں مبتلا ہیں لہذا حکومت کو اپنے فیصلے پر نظر ثانی کرنا چاہیے۔ پارٹی نے عام لوگوں کی پریشانی کو مدنظر رکھتے ہوئے پٹرول پمپ،ریلوے اسٹیشنوں،ہسپتالوں اورپبلک سیکٹر میں پرانے نوٹوں کے لین دین کی تاریخ ۳۱؍دسمبر تک بڑھانے کا مطالبہ کیا ہے۔اس کے ساتھ ہی بینکوں اور اے ٹی ایم میں مناسب مقدار میں نوٹوں کی دستیابی کے لیے جنگی پیمانے پر اقدامات کیے جائیں۔پرانے نوٹوں کو تبدیل کرنے اور نکالنے کی مقرر ہ حد میں توسیع کی جائے۔ اس موقع پر ریاستی جنرل سکریٹری اشفاق احمد نے کہا کہ مرکزی حکومت نے بغیر کسی تیاری کے ملک میں ۵۰۰؍ اور۱۰۰۰؍  روپے کے نوٹوں پر اچانک پابندی عائد کرکے کسانوں، مزدوروں، غریبوں اور خواتین کو شدید پریشانی میں مبتلا کردیا ہے۔ نریندر مودی حکومت کے اس نام نہاد سرجیکل حملوں سے کالا دھن رکھنے والوں کا پکڑا جانا بے حد مشکل ہے کیونکہ ایسے لوگوں نے پہلے ہی سے اپنے کالے دھن کو ڈالر، سونا اور رئیل اسٹیٹ میں تبدیل کردیا ہے۔ ان پر اس سرجیکل اسٹرائیک کا کچھ اثر ہونے والا نہیں ہے۔ حکومت کے اس سفاکانہ اقدام کی وجہ سے افراط زر کی شرح میں مسلسل اضافہ ہوگا اور اقتصادی عدم توازن پیدا ہوگا۔ اس احتجاجی مظاہرے میں ضلعی صدر ظفر چشتی، ضلع نائب صدرعمران بابا، ضلع سکریٹری راجہ وارثی، جاوید حسین سمیت سیکڑوں کارکنوں نے شرکت کی۔ اسی طرح کیرل اور آندھرا پردیش کے تمام اہم شہروں میں ایس ڈی پی آئی کے کارکنوں نے عوام کی تائید میں مرکزی حکومت کے خلاف ریلیا ں نکالیں اور احتجاجی مظاہروں کا انعقاد کیا۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *