علم کا گہوارہ بننے کی کوشش کرنی چاہیے: صدرِ جمہوریہ

Visitor's Award by President

نئی دہلی، ۱۵ مارچ: راشٹرپتی بھون میں آج صدرِ جموریہ پرنب مکھرجی کے ہاتھوں سال ۲۰۱۶ کے لیے وزیٹرس ایوارڈس تقسیم کیے جانے کے بعد ’فیسٹیول آف اِنّوویشن‘‘ کا اختتام ہوگیا۔ صدرِ جمہوریہ نے تیزپور یونیورسٹی کو ’بہترین یونیورسٹی‘ کا انعام دیا، جب کہ پروفیسر راکیش بھٹناگر اور جواہر لعل نہرو یونیورسٹی کے مولیکیولر پیراسائٹولوجی گروپ کو بالترتیب ’ریسرچ‘ اور ’اِنّوویشن‘ کا ایوارڈ دیا۔ اس موقع پر وزیر برائے فروغِ انسانی وسائل اسمرتی ایرانی سمیت متعدد یونیورسٹیز کے وائس چانسلرس اور دیگر اہم شخصیات بھی موجود تھیں۔

اس موقع پر تقریر کرتے ہوئے صدرِ جمہوریہ نے کہا کہ ان ایوارڈس سے تمام مرکزی یونیورسٹیوں اور اساتذہ کو مزید آگے بڑھنے کا حوصلہ ملے گا۔ پرنب مکھرجی نے ان سے کہا کہ وہ علم و آگہی کے گہوارہ کی تشکیل کے لیے کام کریں۔ انھوں نے تیزپور یونیورسٹی اور جواہر لعل یونیورسٹی کو ایوارڈ حاصل کرنے پر مبارکباد بھی پیش کی۔

صدرِ جمہوریہ نے کہا کہ تیز پور یونیورسٹی نے ان کے اس عقیدہ کو پختہ کیا ہے کہ شمالی مشرقی خطے میں اعلیٰ تعلیم کا مستقبل روشن ہے اور اس سلسلے میں زمینی سطح پر کام بھی ہو رہا ہے۔ انھوں نے یہ بھی کہا کہ ہم نارتھ ایسٹ کی تخلیقی صلاحیتوں کو جتنا استعمال کریں گے، اس سے اس خطہ اور پورے ملک کو اتنا ہی فائدہ ہوگا۔

جے این یو کے بارے میں صدرِ جمہوریہ نے کہا کہ ’’تحقیق اور نئی دریافت دونوں ہی زمرے میں جے این یو کے سائنس دانوں کو انعام ملنا اس بات کا اشارہ ہے کہ اس یونیورسٹی میں تحقیق و دریافت کا کام کتنی گہرائی سے چل رہا ہے۔‘‘

انھوں نے سبھی کو مبارکباد دیتے ہوئے آنے والے دنوں میں بھی ان کی کامیابی کی دعا کی۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *